بریکنگ نیوز

جد و جہد کے مسلسل 50سال

FB_IMG_1502019231269-6.jpg

تحریر آزاد احمد چوہدری

30 نومبر 1967 کو ڈاکٹر مبشر کے گھر بننے والی یہ جماعت پاکستان پیپلزپارٹی اپنی جد و جہد کے پچاس سال مکمل کر رہی ہے ۔ پاکستان میں بننے والی اکثر سیاسی جماعتیں اسٹیبلیشمنٹ کی کوکھ سے ہی جنم لیا ہے ۔
یہ وہ جماعت تھی جس نے جمہوریت کے پودے کا بیج بویا اور پھر جلد ہی 1970 کے الیکشن میں مغربی پاکستان میں اکثریت حاصل کر لی جبکہ مشرقی پاکستان سے شیخ مجیب کی جماعت نے اکثریت حاصل کی اور پھر اپنو نے کیا اور بے گانوں نے کیا کسی نے بھی کوئی کسر نہ چھوڑی اور پھر اس طرح کا تناوٗ پیدا کیا گیا کہ پاکستان دو لخت جگر ہوگیا۔

ایسے میں ملک قائد ایوان زوالفقار علی بھٹو کو ملا ٹوٹی ہوئی ریاست کو کس طرح سے ہی کم وقت میں دنیا کیساتھ کھڑا کیا، یہ صرف ذوالفقار علی بھٹو ہی کر سکتے تھے۔ وہ جانتے تھے کہ بھارت ایک ایٹمی ملک ہے اس لئے انہوں نے بھی ہر صورت ایٹمی پروگرام شروع کیا ۔اسلامی ممالک کو ایک پلیٹ فارم پر اکھٹاکیا اور اسلامی سربراہی کا نفرنس پاکستان میں منعقد کروائی اور پاکسانی عوام کو زریعہ معاش کے لئے باہر کی دنیا میں روابط قائم کر کہ بھیجا جو ایک بہت بڑا زرمبادلہ پاکستان بیھجتے ہیں ۔ خاص کر عرب ممالک میں ہزاروں نہیں لاکھوں پاکستانی بر سر روزگار ہیں یہ سہرا بھی پاکستان پیپلزپارٹی کے قائد ذوالفقار علی بھٹو کو ہی جاتاہے۔

پڑوسی ممالک کیساتھ اچھے تعلقات استوار کیے وہ پہلا وقت تھا جب ذوالفقار علی بھٹو نے سویت یونین روسِ کیساتھ تعلقات بہتر کیے اس سے پہلے تو پاکستان امریکیوں کی راہ بنا ہوا تھا، بھارت سے 90 ہزار پاکستانی فوجیوں کی رہائی سمیت رقبہ بھی واپس لینے کا سہرا ذوالفقار علی بھٹو کو جاتا، ہے۔چین کیساتھ تعلقات استوار کرنے کا سہرا بھی ذوالفقار علی بھٹو کی شخصیت کو ہی جاتا ہے اقتدار میں آنے سے پہلے وزیر خارجہ کی صورت میں اور پھر وزیر اعظم کے طور پرہم دیکھ سکتے ہیں کہ انہوں نے اپنے قلیل سے وقت میں کس طرح پاکستان کو واپس کھڑا کیا ان کو بھی کچھ عناصر نے اپنے لیے خطرح سمجھ کر نہ رہنے دیا ایک سنبھلتے ملک کو مارشل لاء کو حوالے کردیا اور چلتی کشتی رک گٗی جو اس طرح پھر کبھی نہ پھر چل سکی۔

ذوالفقار علی بھٹو کے دونوں بیٹے اور بیٹی شہید ہوئے اور خود بیچ جوانی کسی سے کوئی معاہدہ نہ کیا بلکہ تاریخ میں زندہ ہو گئے خود کو تختہ دار پر چڑھا کر ۔اس چیز کا جائزہ لے لیں کے پاکستان پیپلز پارٹی ہی وفاق کی علامت سمجھی جاتی ہے۔ جس میں چھوٹوں صوبوں کی نھی سنی جاتی ہے ہر مسئلہ کو پارلیمنٹ ہی کے زریعے حل کرنے کو تر جیح دی جاتی ہے۔جبکہ باقی سب کے سامنے ہے وہ کیا کرتے ہیں ان کے مراسم کدھر کدھر سے نکل رہے ہیں ان کی فیکٹریوں میں سے کیا کیا مل رہا ہے ۔ناراض پاکستانیوں کو قومی دھارے میں لانا پاکستان پیپلز پارٹیٰ کا ہی بس کا کام ہے۔
ملک کی خارجہ پالیسی ہو۔دفاعی اکانومی زرعی یا کوئی بھی اس کو بہتر سے بہتر کرنا پاکستان پیپلز پارٹی ہی کر سکی آج تک اختیارات کی بات ہو یا حکومتی وسائل کی عام عوام تک پپہنچانے کی بات پاکستان پیپلز پارٹی ہی نے کی ہے ہمیشہ ہی۔ بے جا تنقید کے باوجود بھی سنبھل کر عوام کے دلوں میں راج کر رہی ہو وہ جماعت پاکستان پیپلز پارٹی ہی ہے۔

ایک بات جو اکثر ہوتی ہے کہ پیپلز پارٹی ایک خاندان کی پارٹی ہی ہے ہاں ہے یہ بات مگر دوسری کئی ایک مفاد پرست خوشامدی ٹولے اور چلے کرتوسوں سے کئی بہتر ہے آج بھی، دوسری بات ساوٗتھ ایشیا میں ابھی جمہوریت اتنی بہتر سطح پر نہیں کے کوئی بھی کسی بھی پارٹی کو چلا سکے ہم سے زیادہ بڑی جمہوری ملک بھارت ہے مگر ادھر بھی خاندان واحد ہی جمہوریت سمجھا جا رہا ہے۔ امید کی جا سکتی ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی یہ داغ بھی اپنے ماتھے سے ہٹا دے گی ۔اور اپنی جد و جہد اسی طرح ہر دور میں ہر وقت میں جاری رکھے گی۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ