بریکنگ نیوز

فلسطین کا درد اپنی جگہ مگر

IMG-20171231-WA0000.jpg

تحریر طارق محمود

فلسطین کا درد اپنی جگہ مگر ہزاروں پاکستانیوں کی ریلیاں نکالنا اس وقت رائیگاں چلا گیا جب حافظ سعید کی شرکت پر محض انڈیا کے اعتراض پر فلسطینی صدر نے پاکستان میں موجود اپنا سفیر یہ کہتے ہوئے واپس بلا لیا کہ ہمارے سفیر سے ریلی میں شرکت کر کے نادانستہ غلطی ہوئی اور ہم انڈیا کی ناراضگی مول نہیں لے سکتے اسلئیے اپنا سفیر واپس بلا رہے ہیں۔
پاکستانی شروع دن سے اسلام کے ٹھیکیدار بن کر فلسطینی لوگوں کیلئے ہلکان ہوئے جارہے ہیں مگر وہ یہ بھول جاتے ہیں کہ محترم یاسر عرفات کے گاندھی سے گہرے تعلقات تھے اور محترم نے جتنے دورے انڈیا کے کئے تھے شاید پاکستان اس سے آدھی دفعہ بھی نہیں آئے تھے۔ انہی گہرے تعلقات کی وجہ سے یاسر عرفات نے کبھی ٹھیک طرح کشمیر کے مسئلے پر بات نہیں کی تھی بلکہ وہ حقیقت میں انڈین پوائنٹ آف ویو کے حامی تھے۔

دس سال پہلے سٹاک ہوم سویڈن میں میرے گھر کے نزدیک ایک نیا لڑکا رہنے آیا جو فلسطینی مسلمان تھا اور اسکے پاس اسرائیل کا پاسپورٹ تھا۔ باقی پاکستانیوں کی طرح میں بھی اسے اپنا دُکھی بھائی سمجھ کر اس پر دل وجاں سے فدا ہو گیا۔ اس نے اسی محبت پر مجھ سے کہیں جانے کیلئے میری گاڑی لی اور پارکنگ ٹائم نہ لگانے پر بھاری جرمانے کی پرچی کہیں باہر ہی پھینک دی اور واپس آکر مجھے اس بابت کچھ نہیں بتایا۔ وہ نہ صرف منشیات کے کام میں ملوث تھا بلکہ میں نے اسکے پاس پستول بھی دیکھا تھا۔ خیر کچھ عرصے بعد وہ تو وہاں سے چلا گیا مگر مجھے اس وقت حیرت کا جھٹکا لگا جب گھر کے ایڈریس پر ایک لاء فرم کا لیٹر وصول ہوا کہ چونکہ میں نے وقت پر پارکنگ کمپنی کا 400 سویڈش کرونے کا بل جمع نہیں کروایا لحاظہ اب مجھے 500 مزید جرمانے کیساتھ ٹوٹل 900 پندرہ دنوں میں جمع کروانے ہیں بصورت دیگر میں سویڈن میں بلیک لسٹ ہو جاؤں گا۔

میں فلسطینیوں کا مخالف نہیں ہوں اور نہ ہی اسرائیل کی حمایت کررہا ہوں بلکہ میں درخواست گزار ہوں کہ خدارا اپنے ملک کے مسائل پر پہلے توجہ دیں اور ان سیاسی اور سماجی ڈاکوؤں کا احتساب کریں جنہوں نے آپکا اور آپکی آنے والی نسلوں کا حق مارا ہوا ہے، بجائے اسکے کہ آپ اسلام کے ٹھیکیدار بن کر باقی دنیا کے مسائل پر مظاہرے کریں۔

اس وقت اسرائیل ایک طاقت ہے اور دنیا کے تمام بڑے بنک اور کاروبار بشمول میڈیا انکے تسلط میں ہیں۔ پاکستان کا آدھے سے زیادہ ٹیکس کا پیسہ نام نہاد قرضوں پر سود کی مد میں یہودیوں ہی کو جارہا ہے۔ جن عرب ملکوں سے محبت میں آپ اسرائیل سے نفرت کرتے ہیں انہی عربوں کے اسرائیل سے ظاہر اور خفیہ معاہدے ہیں۔ پاکستانی نہ پہلے کبھی تین میں تھے نہ تیرہ میں اور نہ اب انٹرنیشنل ایشوز پر انکی کوئی رائے سنی جاتی ہے اور اگر یہی لوٹ مار جاری رہی تو مستقبل میں حالات اس سے بھی بدتر ہونے کا امکان ہے۔
(تحریر طارق محمود)

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ