بریکنگ نیوز

این میری شمل

5643FC92-83CF-4A78-9094-6CC6906F7758.jpeg

تحریر ثقلین امام

این میری شیمل کا سن دو ہزار تین میں انتقال ہوا تھا۔ گزشتہ روز یعنی 26 جنوری کو اُن کی پندرھویں برسی تھی۔ کیا آپ نے اُن کا کسی میڈیا پر ذکر سنا؟
بتائیے گا ضرور اگر سنا ہو، پلیز!

یہ جرمنی کی اسلامی تصوف کی معروف سکالر این میری شیمل کی قبر کا کُتبہ ہے جس پر اُن کی وصیت کے مطابق حضرت علی کا یہ قول لکھوایا گیا:
اَلنَّاسِ نِيَامُ فاِذا مَاتُو اَنْتَبَهُوا
(لوگ خواب غفلت میں ہیں، جب انہیں موت آئے گی تو بیدار ہوں گے۔)
(People are asleep; only when they die will they be awakened)

این میری شیمل 1922 میں جرمنی میں پیدا ہوئیں۔ چودہ برس کی عمر میں ترکی کے شہر کونیا میں مدفون مولانا جلال الدین رومی کی صوفی شاعری سے اپنے استاد کی بدولت متعارف ہوئیں۔
اور پھر اسلام اور تصوف میں اتنی دلچسپی پیدا ہوئی کہ انیس برس کی عمر میں قرونِ وُسطیٰ کے مصر (یعنی اسلام کی فتح کے بعد کا مصر) پر پی ایچ ڈی کرلی۔
اس کے بعد تو انہوں نے تصوف پر دنیا پھر میں جتنا بھی لٹریچر تھا چاہے وہ عربی میں تھا، فارسی میں، سندھی میں، پنجابی میں، اردو میں، انگریزی میں یا جرمنی میں، سب کا سب پڑھا۔
مولانا رومی کی شاعری کے ساتھ ساتھ اُنھوں نے دیگر فارسی شعرا کی شاعری کے ترجمے انگریزی اور جرمنی زبان میں کیے۔ اُنھیں شعرا پر تنقیدی مضامین بھی لکھے۔
انھوں نے شاہ عبداللطیف بھٹائی، رحمان بابا، اور دیگر نامور سندھی، پشتو اور پنجابی شعرا کی صوفی شاعری کے علاوہ مرزا غالب کی شاعری پر بھی تحقیقی اور تنقیدی مضامین لکھے۔
تاہم وہ صوفی شعرا میں رومی اور علامہ اقبال سے بہت زیادہ متاثر تھیں۔ کئی برسوں تک وہ کونیا میں ہر برس رومی کے مزار پر حاضری دیتی رہیں۔ اسی طرح کا ان کا عشق اقبال اور غالب سے بھی تھا۔

فارسی اور اردو کی صوفی شاعری سے ڈاکٹر این میری شیمل اتنا متاثر ہوئیں کہ اُنھوں نے خود بھی صوفی شاعری کی۔ ان کی ایک نظم کا ایک شعر:
“Make thirsty me, O friend, give me no water!
Let me so love that sleep flees from my door!”
اور اسی نظم کا اُنھوں نے آخری شعر اس طرح لکھا:
“Make thirsty me, O friend, give me no water!
My thirst is proof that you are thirsty, too…”

جب سلمان رُشدی نے Satanic Verses ناول لکھا تو این میری شیمل نے انتہائی ٹھہرے انداز میں لکھا کہ ایک منظم منصوبے کے تحت لٹریچر کی اشاعت کے ذریعے نہ صرف چند مسلمان بلکہ دنیا بھر کے مسلمانوں اور ان کے محبوب نبی محمد ص کو نشانہ بنایا جارہا ہے۔
اُن کے مطابق سلمان رشدی کا ناول بھی مغرب کی اسٹیبلیشمینٹ کی مسلمان دشمن مجرمانہ اور گستاخانہ حکمتِ عملیوں کا حصہ ہے۔ رشدی پر ان کی اس تنقید کے بعد اُنھیں کئی مغربی دانشوروں کی منفی تنقید کا سامنا کرنا پڑا۔

ڈاکٹر شیمل نے کئی ایک کتابیں لکھیں جن میں زیادہ مشہور یہ ہیں:
*Islam: An Introduction
*And Muhammad Is His Messenger
*My Soul Is a Woman
*As Through a Veil: Mystical Poetry in Islam
*Rumi’s World: The Life and Works of the Greatest Sufi Poet
*The Triumphal Sun (Rumi’s Poetry)
*Deciphering the Signs of God
*The Empire of the Greatest Mughals

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ