بریکنگ نیوز

ویلنٹائن ڈے، یوم حیا اور محبت”

5B2324CF-6B91-4D88-98FA-BAAE6C9C83BA.jpeg

تحریر ثاقب ملک

المیہ یہ ہے کہ محبت ہوس کا دوسرا نام بن گئی. دوپٹے سے جھانکتی حسین اور شرمیلی مسکراہٹوں کی جگہ تیز سانسوں اور چھلکتی جبلتوں نے قبضہ جما لیا ہے. صدمہ تو یہ گزرا ہے کہ اب پیار کا آغاز وہاں سے ہوتا ہے جہاں پچھلے وقتوں میں محبوب سے ہزاروں گھنٹوں کی جدائی کے بعد کہیں قربت کی نوبت آتی تھی. دکھ تو اس لمحے کی جدائی کا ہے کہ محبوب کی ایک جھلک دل کو تسلی و مسرت سے لبریز کر دیتی تھی اور آج گوشت کے لوتھڑے محبت کے نام پر جانوروں کی پیروی کو عشق کی شدت کہتے ہیں.

پہلے پاکیزہ جذبات کی تسکین اولیت رکھتی تھی اب جبلتوں کی بھوک عشق کے حجاب میں رقص کرتی پھرتی ہے. یہ حجاب بھی لڑکیوں کی داڑھی بن گئی ہے. جو مرضی کرو اوپر حجاب اور عبایا لٹکا لو شرافت کا ٹھپا لگاؤ اور چھ چھ سمیں رکھو. پہلے محبوب صرف محبوب کے دل میں بستا تھا آج دو باتیں ہوئی نہیں کہ مارکیٹ میں افئیر آجاتا ہے. پہلے ایک محبت پر لوگ پوری زندگی آہیں بھرتے تھے اب لڑکیوں کے اور لڑکوں کے نمبر ٹرافی کے طور سجائے جاتے ہیں.

بات یہ نہیں کہ ویلنٹائن ڈے منائیں کہ نہ منائیں؟ ایشو تو یہ ہے کہ یہ مرن جوگی محبت ہے کدھر؟ یہ جو پارکوں میں سر جوڑے بیٹھی ہے؟ یہ جو میسجز پر جاری ہے؟ یہ جو تصاویر کا تبادلہ یے؟ یہ جو رات رات بھر چادر کے نیچے موبائل پر سرگوشیاں ہیں؟ یہ جو اندھیری رات میں ماں باپ کی عزت پر سے کودا جاتا ہے یہ ہے محبت؟..طلاق طلاق ہو رہی ہے. عدالتوں میں جاؤ. کیس پر کیس چڑھے ہوئے ہیں. یہ محبتیں ہیں جو دو چار چھ مہینے بعد تھک جاتی ہیں،اکتا جاتی ہیں؟ یا یہ لذتیں ہیں؟

یوم حیا مناتے ہو کبھی سوزوکی میں عورتوں کے ساتھ بیٹھے ہو؟ کبھی پر ہجوم بازار میں عورت کا حال دیکھا ہے؟ کبھی ہسپتالوں میں جنگل کا عالم دیکھا ہے؟ بھیڑ بکریاں جو ویگنوں میں بھری ہوتی ہیں وہ؟ شرم کیا یہ ہے؟ ویلنٹائن ڈے منائیں مگر مجھے محبت بھی لا کر دکھائیں. ویلنٹائن ڈے لے آئیں یا شرم و حیا کے ترانے گائیں جب اخلاقی المیہ یہ ہو کہ اپنی بہن بھائی کی شادیوں پر نیم برہنہ مجرے ہوتے ہوں، ماں بہنوں کے بغیر گالیاں مکمل نہ ہوتی ہوں، قرآن سے شادیاں ہوتی ہوں، بچیاں بیچی جاتی ہوں اور باپردہ بچے بھی نہ بچتے ہو، اس معاشرے میں ویلنٹائن ڈے یا شرم و حیا ڈے کے ڈھکوسلے کے بجائے پہلے انکو انسان تو بنا لو. جانوروں کو جتنے مرضی کمپیوٹر لیپ ٹاپ پکڑا دو اس نے چاٹنا ہی ہے. بھوکا معدے سے اور پیاسی جبلتیں لذت سے سوچتی ہیں.
پچھلے برس لکھا تھا. شائد ہر برس شئیر کرنا پڑے .

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ