بریکنگ نیوز

چین ٹیکنالوجی جدت میں دنیا بھر میں سرفہرست

pic-1.jpg

(خصوصی رپورٹ)

چین دنیا بھر میں سائینسی اور ٹیکنالوجی جدت میں سرِ فہرست پوزیشن کی جانب تیزی سے گامزن ہے اور بعض ٹیکنالوجی تکنیکی مہارتوں میں چین نے دنیا بھر کے دیگر ترقی یافتہ ممالک کو پیچھے چھوڑ دیا ہے، اسٹیٹ آفس برائے چین کے انفارمیشن آفس کے حوالے سے منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے گزشتہ دنوں وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی وان گانگ نے کہا کہ دنیا بھرکے انٹر نیشنل سائنس جرنلز میں شایع ہونے والے سائنس اور ٹیکنالوجی کے حوالے سے تحقیقی مقالوں میں چینی سائنسدان اور چینی طلباء گزشتہ سال2017میں دنیا بھر میںتحقیقی مقالوں کی اشاعت کے حوالے سے دوسرے نمبر پر رہے ہیں۔ اور گزشتہ سال حالیہ چند سالوں میں یہ پہلی مرتبہ ہے کہ چین نے سائنسی حوالہ جات کی اشاعت کے حوالے سے برطانیہ اور جرمنی کو پیچھے چھوڑ دیا ہے۔ مزید براں انہوں نے واضح کیا کہ سندِ حقِ تحفظ کے حوالے سے بھی تمام تر لائحہ عمل دنیا بھر کے سامنے اپنی شفافیت اور کارکردگی کے حولے سے اپنی اہمیت کو اجاگر کر رہا ہے۔ یوں عالمی سطع پر چین کی سائنس اور ٹیکنالوجی جدت پزیری کے حوالے سے اثرورسوخ کو دنیا بھر کے ترقی یافتہ ممالک ماننے پر مجبو ر ہیں جن میں جیولانگ، جسے دنیا بھر میں سب سے بڑے اپرچر ریڈیو ٹیلیسکوپ ہونیکا اعزاز حاصل ہے اسکے ساتھ ساتھ ڈارک مواد سے متعلق کھوج لگانے والاووکانگ سیٹلائیٹ، اس تمام تر ترقی اور جدت کیساتھ ساتھ وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی وان کانگ نے اس عزم کا اظہار کیا کہ چین اس جدت پسندانہ ترقی کے عمل کو مزید بڑھانے اور فروغ دینے کا خواہاں ہے۔ واضح رہے کہ چین نے کیمونسٹ پارٹی آف چائینہ کی 19ویں نیشنل کانگریس کے موقع پر اس عزم کا اظہار کیا تھا کہ چین کو دنیا میں جدت پسندی کے حوالے سے سب سے آگے لیجایا جائے گا۔ اور اس امر کو واضح کی گیا کہ جدت پسندی ہی وہ امر جس کے زریعے سے چین پیداوار کے تسلسل کو برقرار رکھ سکتا ہے۔ اور اسی اصول کی بناء پر جدید معیشت کے تصور کو آگے لیکر جایا جا سکتا ہے۔ سال 2017کے دوران چین نے سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبے میں ریسرچ کے حوالے سے ایک اندازے کے مطابق 278بلین ڈالر خرچ کیئے ہیں اور 2012 کے مقابلے میں اس خرچ کی شرح میں ستر فیصد تک اضافہ ہوا ہے اور سائنس اور ٹیکنالوجی کے شعبے میں پیداوار کے حوالے سے 57فیصد اضافہ نوٹ کیا گیا ہے۔ جدت پسندی کے حوالے سے چین 2012 کے مقابلے میں عالمی سطع پر انڈیکس کی شرح کے حوالے سے سترویں پوزیشن پر ہے2016میں چین کی ڈیجیٹل معیشت کی شرح 22.6ٹریلین یوآن تک پہنچ چکی تھی۔ اور اس دوران ریٹیل سیل براستہ آن لائن فروخت دنیا بھر میں سب سے زیادہ تھی۔ چین دنیا بھر میں صنعتی جدت پسندی کو بھی مثبت انداز میں آگے لیکر بڑھ رہا ہے۔ اور چونکہ چین بذاتِ خود ایک بہت بڑی مارکیٹ ہے اس لیے جدت پسندی کے حوالے سے دنیا بھر کی توجہ کا مرکز ہے۔ واں نے اس عزم کا اظہار کیا کہ چین آئیندہ سالوں میں ٹیلنٹ کے فروغ اور ٹیکنالوجی مہارتوںسے سب کو مستفید کریگا۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ