بریکنگ نیوز

چین نے سیلیکان ویلی کیلے غیر ملکی ٹیلنٹ کی ترویج کے لیے 20اقدامات کا آغاز کر دیا

China.jpg

بیجنگ کی حکومت نے حالیہ جاری پالیسی پیپر کے تحت 20ایسے نئے اقدامات اور عوامل کا آغاز شروع کیا ہے تاکہ دنیا بھر کے غیر ملکی پروفیشنل اور ایکسپرٹس کو بیجنگ کی جدید ٹیکنالوجی مرکز ژونگ گوانکن جسے عرفِ عام میں چین کی سیلیکان ویلی بھی کہا جاتا ہے اس ٹیکنالوجی مرکز کے لیے ان اعلی زہنوں کو اس ویلی کی جانب راغب کی اجس سکے۔ بیجنگ حکومت کی جانب سے شروع کیئے گئے ان 20اقدامات کے تحت دنیا بھر کے قابل اور پروفیشنل لوگوں کو بالخصوص وہ ایکسپرٹس جو انفارمیشن ٹیکنالوجی سے متعلق ہیں انہیں چین کے دارلحکومت میں بہتر سروسز مہیا کرنے، انکی چین میں داخلہ اور ایگزٹ سے متعلق آسانیاں ، اور سوشل سیکورٹی کی سہولیات سے متعلق امور کی انجام دہی شامل ہیں۔ اس کیساتھ ساتھ ان پروفیشنل لوگوں کے چین میں مستقلا رہایشی امور سے متعلق تمام تر قانوں سازی اور دیگر متعلقہ امور سے متعلق ان بنیادی بیس اقدامات کے تحت نیا لائحہ عمل تشکیل دیا جا رہا ہے۔ بیجنگ حکومت کے نئے پالیسی پیپر کے تحت بیرونِ ملک ٹیلنٹس کو چین میں قومی سطع پر سائینٹیفک ریسرچ کے حوالے سے خصوصی ترویج ہوگی اور مستقل رہائشی لائسنس کے حامل غیر ملکی ماہرین کو ریسرچ انسٹی ٹیوٹس کی سربراہی کی بھی اجازت ہوگی۔ اس اعلان کردہ نئے پیکج کے تحت دنیا بھر کے ماہرین کو چین میں کام کرنے اور ریسرچ کے حوالے سے بہترین محرکات فراہم کرنے کے عزم کا اظہار کیا گیا ہے۔ تاکہ یہ غیر ملکی ماہرین اور پروفیشنل لوگ آسانی کیساتھ چین میں اپنے امور کو سر انجام دے سکیں اور ایک بہتر ماحول میں خود کو چینی معاشرے کا حصہ سمجھیں۔ اس ضمن میں ژونگ گوانگکن سائنس پارک کے ڈائریکٹرژائی لیکزن نے کہا کہ چین نے دنیا بھر کے ٹیلنٹس کو چین میں ایک متحرک کردار ادا کرنے کے حوالے سے ایک آئیڈیل اور بہترین ماحول فراہم کرنے کا عندیہ دیا ہے۔ تاکہ تمام چینلز کو استعمال کرتے ہوئے ایک مربوط انداز میں غیر ملکی ماہرین کو چین میں اعلی سطع پر ترویج حاصل ہو، اس حوالے سے چینی حکومت 2008سے گرین کارڈز اور Thousand Talentنام سے ایک پیکج کا اعلان کر چکی ہے، تاکہ دنیا بھر کے ماہرین چین میں اعتماد اور سنجیدگی سے اپنی خدمات کو جاری رکھ سکیں ، ایک حالیہ رپورٹ کے مطابق چین میں موجود انسانی وسائل کی مدد سے چینی ترقی اور پیداوار کے عمل کو جاری رکھا گیا ہے۔ جس میں ان جدید ماہرین کی خدمات کا تناسے بتیس فیصد تک ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ پانچ سالوں میں 3.35ملین ماہرین دنیا بھر سے چین منتقل ہوئے ہیں اور مختلف شعبوں میں خدمات مہیا کر رہی ہیں اور اس کیساتھ ساتھ چینی حکومت مزید ٹیلنٹ کو دنیا بھر سے چین میں مدعو کر رہی ہے۔ اس طرح سے چین دنیا بھر کو قابل اور پرفیشنل لوگوں کو بہترین انداز میں اپنی جانب راغب کر رہا ہے۔ اس حوالے سے فوربس اور ویلسن کنسلٹنگ گروپ جو کہ شنگھائی میں سرمایہ کاری اور ایمیگریشن سے متعلق امور کو دیکھتی ہے انہوں نے کہا کہ چین دنیا کے زہن کو تیزی سے تبدیل کر رہا ہے اور جیسے کے دنیا بھر سے ماہرین چین کا رخ کر رہے ہیں اس ضمن میں چین کے چار بڑے شہر بیجنگ، شنگھائی گوانگ ژو اور شانزن اور دیگر تیزی سے ابھرتے چینی شہر ووہان، چوکنیانگ بھی دنیا بھر کے ماہرین کو اپنی جانب راغب کر رہے ہیں جس اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین غیر ملکی ماہرین کے تجربات سے فاہدہ اٹھانے کے لیے کس قدر کوشاں اور سنجیدہ ہے۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ