بریکنگ نیوز

نواز شریف اور آصف زرداری کا موازنہ

IMG-20180314-WA0125.jpg

! تحریر عابد اقبال
‎ترکهان دکان بند کر کے گهر گیا تو کہیں
‎سے گهومتا پهرتا ایک سیاہ کوبرا ناگ اس کی ورکشاپ میں گهس آیا. یہاں بظاہر تو ناگ کی دلچسپی کی کوئی چیز نہیں تهی پهر بهی ادهر سے ادهر اور اوپر سے نیچے جائزہ لیتا پهر رہا تها کہ اس کا دهڑ وہاں پڑی ایک آری سے ٹکرا کر بہت معمولی سا زخمی ہو گیا.
‎گهبراہٹ میں ناگ نے پلٹ کر آری پر پوری قوت سے ڈنگ مارا. فولادی آری پر زور سے لگے ڈنگ نے آری کا کیا بگاڑنا تها الٹا ناگ کے منہ سے خون بہنا شروع ہو گیا. اس بار خشونت اور تکبر میں ناگ نے اپنی سوچ کے مطابق آری کے گرد لپٹ کر، اسے جکڑ کر اور دم گهونٹ کر مارنے کی پوری کوشش کر ڈالی.
‎دوسرے دن جب ترکهان نے ورکشاپ کهولی تو ایک ناگ کو آری کے گرد لپٹے مردہ پایا جو کسی اور وجہ سے نہیں محض اپنی طیش اور غصے کی بهینٹ چڑھ گیا تها.
‎بعض اوقات غصے میں ہم دوسروں کو نقصان پہنچانے کی کوشش کرتے ہیں، مگر وقت گزرنے کے بعد ہمیں پتہ چلتا ہے کہ ہم نے اپنے آپ کا زیادہ نقصان کیا ہے.
‎اچهی زندگی کیلئے بعض اوقات ہمیں
‎کچھ چیزوں کو
‎کچھ لوگوں کو
‎کچھ حوادث کو
‎کچھ کاموں کو
‎کچھ باتوں کو
‎نظر انداز کرنا چاہیئے.
‎اپنے آپ کو ذہانت کے ساتھ نظر انداز کرنے کا عادی بنائیے، ضروری نہیں کہ ہم ہر عمل کا ایک رد عمل دکهائیں. ہمارے کچھ رد عمل ہمیں محض نقصان ہی نہیں دیں گے بلکہ ہو سکتا ہے کہ ہماری جان بهی لے لیں.

‎سب سے بڑی قوت۔۔۔قوتِ برداشت ہے

‎صبر ایسی سواری ہے جو اپنے سوار کو گرنے نہیں دیتی
‎نہ کسی کے قدموں میں۔۔۔ نہ کسی کی نظروں میں.
‎اور یہ فن صرف اور صرف جناب آصف علی ذرداری کے پاس ہے، جو شخص ہر وقت پروپیگنڈہ کا شکار رہا آج تک اس کی زباں سے کسی مخالف کے بارے نازیبا گفتگو نہیں سنی۔ غیروں کے اور اپنوں کے نشتر سہتا رہا مگر اُف تک نا کی، شھید بھٹو اور شھید بی بی کی سوچ کو آگے لے کر بڑھتا رہا۔ نازک حالات میں پاکستان کی فلاح کی سوچ، اندرونی اور بیرونی خطرات کے خلاف سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑا ھونے والا آصف علی ذرداری ہی تو ہے۔ نواز شریف کی سیاست بالکل کالے ناگ جیسی ہے جو ہر پسپائی پر آگ بگولا ہو کر اپنے آپ کو نقصان پہنچاتا ہے وقت کی مناسبت دیکھے بغیر، اسی لئے پیر پگارو بھی نواز شریف کے متعلق فرماتے تھے کے جب نواز شریف طاقت میں ہوتا ہے تو گردن پر ہاتھ ڈالتا ہے اور جب مشکل میں پڑتا ہے تو پیر بھی پکڑ لیتا ہے، غالبا امام کعبہ نے بی یہ بات سن لی اور انھوں نے بھی نواز شریف سے ملاقات سے انکار کیا آخری خبروں تک، اب میاں محمد نواز شریف کو سنجیدگی سے سوچنا چاہئے کے ان کے ارد گرد کہیں مفاد پرستوں کے گھیرے کی وجہ سے انکی یہ حالت تو نہیں؟
نوازشریف کو اعتزاز احسن کے اس مشورے کو بھی ضرور مد نظر رکھنا چاہئے جو اُنھیں دھرنے کے دوران دیا گیا تھا کے اپنے مشیر تبدیل کریں۔
دوسری طرف آصف علی ذرداری نہایت سکون اور صبر کی سیاست کر رہے ہیں اور وقت آنے پر اپنے کارڈ کھیل رہے ہیں، ابھی تک جو کچھ بھی اُنھوں نے فرمایا ہے اس پر کاربند رہے
سسٹم کی حفاظت کی۔
چار سال بعد سیاست شروع کی تا کے جمہوریت قائم رہے کیونکہ قول ہے کے لولی لنگڑی جمہوریت آمریت سے کئی گنا بہتر ہے۔
جمہوری طریقے سے بلوچستان میں تبدیلی لانے میں اپنا تجربہ استعمال کیا۔
جمہوری طریقے سے اپنے چئیرمین اور ڈپٹی چئیرمین سینیٹ میں منتخب کروائے۔
آصف علی ذرداری اوپر بیان کی گئی کہانی کی طرح صبر کا دامن پکڑے رہے اسی وجہ سے کامیابیاں انکی جھولی میں آتی جا رہی ہیں۔
اب انھیں بلاول بھٹو ذرداری کو پنجاب کا ٹاسک دینا چاہئے کیونکہ وقت کم ہے اور سفر بہت کٹھن، امید کی جا سکتی ہے کے آنے والے انتخابات میں تیر کمان یعنی آصف علی ذرداری اور بلاول بھٹو ذرداری بہت سے حیران کن نتائج دیں گے

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ