بریکنگ نیوز

بوائو فورم 2018 پرامن ترقی اور باہمی تعاون کے حوالے سے اہم ترین سنگِ میل ہے

boao-april-10-2018-chinese-president-xi-jinping-c-671154.jpg

۔۔۔ (خصوصی رپورٹ):۔

جنوبی چین کے جزیرہ نما صوبے ہائینان میں منعقد ہونیوالی چار روزہ بوائو فورم جس کا انعقاد 8اپریل سے ہو چکا ہے چینی صدر شی جنپگ بوائو فورم 2018کی افتتاحی تقریب سے اہم ترین خطاب کیا ۔ اس حوالے سے چین میں منعقدہ اس فورم کے موقع پر چینی صدر شی جنپگ کی شرکت اس حوالے سے اہم ترین ہے کیونکہ چین ایشیا اور پڑوسی ممالک کیساتھ مشترکہ مفادات کے حوالے سے ایک ایسی کمیونٹی کا خواہاں ہے جس کے تحت سب کے مفادات مشترک ہوں ، یہ فورم اس حوالے سے بھی بہت اہمیت کا حامل ہے کیونکہ 2018میں چین ملک میں اقتصادی اور اصلاحات کے پھیلائو کے حوالے سے شروع کیئے گئے اقدامات کا 40واں سال بھی منا رہا ہے۔ اس کیساتھ ساتھ 2018سال چین میں کیمونسٹ پارٹی آف چائینہ کی 19ویں نیشنل کانگریس کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات پر عمل درامد کے حوالے سے سال کے طور پر بھی منا رہی ہے۔ واضح رہے کہ 2013میں بوائو فورم برائے ایشیا کے موقع پر چینی صدر شی جنپگ نے مشترکہ مفادات کے حوالے سے مبنی ایک ایسی کمیونٹی کے قیام کا آئیڈیا پیش کیا جن کے باہمی مفادات ایک دوسرے سے منسلک ہوں اور یہ کمیونٹی نہ صرف اپنے پڑوسی ممالک بلکہ ایشیا اور دنیا بھر میں اس فلسفے کو لیکر آگے بڑھیں، اس طرح سے 2013کے بعد دو سال میں مشترکہ مفادات پر مبنی کمیونٹی کے قیام کے آئیڈیا کو تقویت حاصل ہوئی۔ اور بوائو فورم برائے ایشیا کے بعد اس خیال کو دنیا بھر میں اور اقوامِ متحدہ کے فورم پر خصوصی ترویج بھی حاصل ہوئی ہے۔ تاہم عالمی سطع پر دنیا کی بعض طاقتوں کی جانب سے تحفظ پر مبنی پالیسز کی وجہ اس فلاسفی کو خاصا نقصان بھی پہنچنے کا خدشہ ہے اور ملکی مصنوعات پر کثیر الجہتی بین الاقوامی نظام کے تحت مختلف پابندیوں کا بھی ممکنہ سایہ سر اٹھا رہا ہے۔ اس طرح سے گلوبلائزیشن کے حوالے سے جو سخت اقدامات دنیا کے مختلف خطوں میں سر اٹھا رہے ہیںوہ اس امر کی متقاضی ہیں کہ دنیا کی چند طاقتیں ابھی بھی پرانی زہنیت کو لیکر چل رہی ہیںاس طرح چند ممالک کی جانب سے عالمی تعاون اور کثیر الجہتی تعاون کے خلاف اٹھائے گئے اقدامات مشترکہ مفادات کو نقصان پہنچانے کا سبب بن رہے ہیں۔ اس حوالے سے بعض مغربی اسکالرز نے اس باہمی اور مشترکہ معاونت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ باہمی تعاون پر مبنی پالیسیز تاریخ کا کتابوں کا حصہ بن چکا ہے بشرطیکہ یہ آئیڈیاز دنیا کو ایک مرتبہ اہم مسائل سے نکال چکے ہیں، واضح رہء کہ دنیا میں امن اور خوشحالی تبھی ممکن بنائے جا سکتے ہیں جب دنیا کے تمام ممالک اور اقوام کو یکساں انداز میں اس خوشحالی اور ترقی کے سفر میں آگے بڑھنے کے یکساں مواقع میسر آئیں۔ چین کی جانب سے چالیس سال قبل اصلاحات اور اقتصادی ترقی کے حوالے سے جن اقدامات کا آغاز کیا گیا تھا آج دنیا بھر کے ممالک میں ان کے ثمرات سامنے آ رہے ہیں۔ اور عالمی سطع پر یکساں مفادات کے حوالے سے ایک کمیونٹی کا قیام چینی صدر شی جنپگ کا آئیڈیا تھا جسے آج دنیا بھر میں پزیرائی حاصل ہو رہی ہے۔ چینی صدر نے کہا تھا کہ چین کی اقتصادی وسعت اور اصلاحات کے حوالے سے اقدامات چالیسوایں سال میں داخل ہو چکے ہیں جن کے ثمرات دنیا کی ترقی اور یکساں خوشحالی کی صورت سامنے آرہے ہیں۔ چین بیلٹ اینڈ روڈ منصوبوں کو کامیابی کیساتھ لیکر آگے بڑھ رہا ہے۔ مزید چائینہ پہلی بار جلد بین الاقوامی امپورٹ ایکسپو کا آغاز کرنے جا رہا ہے جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین جہاں اپنی آبادی کو ایک مربوط معیارِ زندگی کو بہتر کر رہا ہے وہیں دنیا کے دیگر ممالک کی ترقی کے لیئے بھی سنجیدگی سے کوششوں کو آگے لیکر بڑھ رہا ہے ۔۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ