بریکنگ نیوز

خشک دودھ : درآمدات پر ڈیوٹی بڑھانے کا امکان

Skim-Milk-Powder-Whole-Milk-Powder-Whey.jpg

خشک دودھ اور وے پاؤڈر

منسٹری درآمدات پر ڈیوٹی بڑھانے کا سوچ رہی ہے۔

منسٹری آف نیشنل فوڈ سیکورٹی اینڈ ریسرچ خشک دودھ اور وے پاؤڈر کی درآمد پر ڈیوٹی بڑھانے پر سوچ بچار کر رہی ہے تاکہ ڈیری فارمرز اور ملک پراسیسنگ کی صنعت کو فائدہ پہنچایا جا سکے۔

وزارت نے کسانوں اور لائیو سٹاک اور ملک پراسیسنگ انڈسٹری کے نمائندوں سے اس ضمن میں تجاویز طلب کی ہیں۔

پاکستانی ڈیری ایسوسی ایشن (پی ڈی اے) نے منسٹری کے سامنے تجاویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ وے پاؤڈر اور خشک دودھ کی درآمد کے لئے کسانوں سے خریدے گئے تازہ دودھ کی مقدار پر مخصوص قسم کا کوٹہ عائد کیا جائے۔

پی ڈی اے کے نمائندوں نے وزارت کو مطلع کیا کہ کوٹہ سسٹم نہ صرف انڈسٹری کو فائدہ دے گا بلکہ کسان بھی اس سے مستفید ہوں گے۔ اس مسئلے کو ہمیشہ کے لئے حل کرنے کا یہ واحد قابل عمل رستہ ہے۔

ایسوسی ایشن نے اپنی سفارشات میں کہا کہ دودھ کی درآمد پر ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کرنے کے لئے سالانہ کوٹہ سسٹم متعین کر دیا جائے۔انہوں نے تجویز پیش کی کہ جس دودھ کی کوٹہ کے تحت درآمد ہو گی اس پر پانچ فیصد تخفیف شدہ ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کی جائے جبکہ کوٹہ کے تحت نہ آنے والی دودھ کی درآمدات پر 60 فیصد تک ریگولیٹری ڈیوٹی عائد کی جائے۔

نیشنل فوڈ سیکورٹی کے وزیر سکندر حیات بوسن کو بریفنگ دیتے ہوئے پی ڈی اے کے نمائندے ریحان سعید نے حکومت کو یہ پیش کش بھی کی کہ وہ ڈیری انڈسٹری کو تخفیف شدہ ریگولیٹری ڈیوٹی کے تحت خشک دودھ کی درآمد کی اجازت چند شرائط سے منسلک کر دے۔

انہوں نے کہا کہ انڈسٹری سے مطالبہ کیا جا سکتا ہے کہ وہ کسانوں کی ترقی میں ممد و معاون ہو اور ان سے روزانہ کی بنیاد پر خریدے گئے دودھ کی مقدار میں اضافہ کرے تاکہ ان کی زندگی میں خوشگوار تبدیلی لائی جا سکے۔

منسٹری کو یہ بھی بتایا گیا کہ فیڈرل بورڈ آف ریوینیو کے پاس موجود ڈیٹا کے مطابق ڈیری انڈسٹری 55 فیصد خشک دودھ اور وے پاؤڈر درآمد کرتی ہے جبکہ باقی کا 45 فیصد بیکریز اور مٹھائی کی دکان والے درآمد کرتے ہیں۔

ڈیری ایسوسی ایشن کے نمائندوں نے وزارت کو کہا کہ جو لوگ کسانوں سے دودھ خرید رہے ہیں، انہیں فائدہ پہنچانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اس فارمولے پر انڈونیشیا ، تھائی لینڈ اور ترکی میں کامیابی سے عمل کیا جا چکا ہے۔

وزارت کو ایسوسی ایشن کی جانب سے پیش کی گئی اس تجویز پر بھی غور کرنا چاہئے کہ متعلقہ سٹیک ہولڈرز سے درآمد شدہ خشک دودھ اور وے پاؤڈر کو کھلی مارکیٹ میں فروخت نہ کرنے کا اقرار نامہ حاصل کیا جائے۔

پی ڈی اے نے منسٹری کو یہ تجویز بھی پیش کی کہ وہ تمام سٹیک ہولڈرز پر مشتمل ایک پاکستان ملک بورڈ تشکیل دے تاکہ کسانوں اور ڈیری صنعت کو درپیش مسائل حل کرنے کے ساتھ ساتھ پورے سیکٹر کو ریگولیٹ بھی کیا جائے۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ