بریکنگ نیوز

یوم مزدور اور اسلام کا عادلانہ نظام

agriculturalpolicyofpakistan-150401131459-conversion-gate01-thumbnail-4-1.jpg

ا
تحریر عبد الباسط عباسی دنیا بھر میں ہر سال یکم مئی کو محنت کشوں سے
اظہار یکجہتی کے لئے مزدوروں کا عالمی دن منایا جاتا ہے۔ یکم مئی 1886ء کو امریکا کے شہر شکاگو کے مزدور، سرمایہ داروں اور صنعتکاروں کی جانب سے کئے جانے والے استحصال کے خلاف سڑکوں پر نکلے تو پولیس نے اپنے حقوق کی آواز بلند کرنے والے پرامن جلوس پر فائرنگ کر کے سینکڑوں مزدوروں کو ہلاک اور زخمی کردیا جبکہ درجنوں کو حق کی آواز بلند کرنے کی پاداش میں تختہ دار پر لٹکا دیا گیا لیکن یہ تحریک ختم ہونے کے بجائے دنیا بھر میں پھیلتی چلی گئی جو آج بھی جاری ہے۔

شکاگو کے مزدوروں کی یاد میں ہر سال یکم مئی کو یہ دن اس عہد کے ساتھ منایا جاتا ہے کہ مزدوروں کے معاشی حالات تبدیل کرنے کیلئے کوششیں تیز کی جائیں اور ان کا استحصال بند کیا جائے۔

پاکستان میں قومی سطح پر یوم مئی منانے کا آغاز 1973ء میں پاکستان کے وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کے دور حکومت میں ہوا۔ اس دن کی مناسبت سے ملک بھر کے تمام چھوٹے بڑے شہروں میں تقریبات، سیمینار، کانفرنسز اور ریلیوں کا انعقاد کیا جاتا ہے جن میں شکاگو کے محنت کشوں کے ساتھ اظہار یکجہتی سمیت مزدوروں اور محنت کشوں کے مسائل کو اجاگر کرنے کے ساتھ ساتھ ان کے حل کے لئے اقدامات کا مطالبہ کیا جاتا ہے۔

گزشتہ کئی برسوں سے دنیا بھر میں یکم مئی کا دن مزدوروں کے عالمی دن کے طور پر منایا جا رہا ہے لیکن اس کے باوجود محنت کشوں کے مسائل کے حل کیلئے اس قدر سنجیدہ اقدامات نہیں کئے گئے جتنے کئے جانے چاہیئیں۔

مزدور کو حقوق صرف اسلام کے عادلانہ نظام کے عملی نفاذ سے ہی مل سکتے ہیں۔اسلام کے معاشی نظام میں غربت کا خاتمہ اور محنت کشوں و مزدوروں کے دکھ درد کو بانٹنا بنیادی حیثیت رکھتا ہے۔ اسلام کا نظام عدل ہر ظالم و جابر کیخلاف تلوار بے نیام اور ہر مظلوم و مزدور اور محنت کشوں کی آواز ہے۔ موجودہ دور میں عوام کے ووٹوں سے منتخب ہونے والے حکمرانوں نے عوام کے حقوق ادا کرنے کی بجائے اپنی ذاتی مفادات کے حصول کو اپنا مقصد حیات بنا لیا ہے۔ اسلام کا نظام عدل ہی مزدوروں اور محنت کشوں کے حقوق کا ضامن ہے۔ مزدور کا پسینہ خشک ہونے سے پہلے اس کا معاوضہ ادا کرنا یہ اسلام کا ہی سنہری اصول ہے۔ سرمایہ دارانہ نظام سوشلزم، کمیونیزم، کپٹیلزم اور اشتراکی نظام نے ہمیشہ محنت کشوں اور مزدوروں کا استحصال کیا ہے۔آج تک دنیا کے سارے نظام اور تجربے ناکام ثابت ہوچکے ہیں۔یہی وجہ ہے غیر مسلم بھی آج اپنی یونیورسٹیوں میں اسلام کے معاشی نظام پر تحقیقات اور ریسرچ کر رہے ہیں مگر پاکستان جیسے اسلامی ملک میں اسلامی نظام کے عدم نفاذ سے معاشرے میں محنت کشوں اور مزدوروں سمیت ستر فیصد عوام کا استحصال ہورہا ہے۔ اسلام کے عادلانہ نظام کے عملی نفاذ سے تمام مسائل خود بخود حل ہونگے۔ موجودہ ظالمانہ نظام سے غربت کی شرح میں اضافہ ہورہا ہے۔جس سے امیر امیر تر اور غریب غریب تر ہوتا جا رہا ہے۔ حکمرانوں کے لئے شکاگو نہیں بلکہ خطبہ حجۃ الوداع کامیابی کا چارٹ ہے۔اسلامی نظام کا عملی نفاذ ہی وقت کی ضرورت ہے۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ