بریکنگ نیوز

برمودا ٹرائی اینگل کی حقیقت

download.png

جنگ عظیم دوئم کے زمانے سے برمودا ٹرائی اینگل ساری دنیا کی توجہ کا خصوصی مرکز رہا ہے اور اس کے بارے میں مافوق البشر یا غیر ماورائی معاملات مشہور ہیں لیکن اب وہ تمام مفروضات اپنی موت آپ مرنے والے ہیں۔

بحر اوقیانوس (اٹلانٹک ) کے ایک مثلث کی طرح کے علاقے کو برمودا ٹرائی اینگل کے نام سے موسوم کیا جاتا ہے۔ اس علاقے کا ایک کونا برمودا میں، دوسرا پورٹوریکو میں اور تیسرا کونا میلبورن، فلوریڈا کے قریب ایک مقام میں واقع ہے۔ برمودا ٹرائی اینگل انہی تین کونوں کے درمیانی علاقے کو کہا جاتا ہے۔

اس مقام سے وابستہ چند داستانیں ایسی ہیں کہ جن کے باعث اس کو شیطانی مثلث بھی کہا گیا ہے۔ ان داستانوں میں انسانوں کا غائب ہوجانا اور بحری اور فضائی جہازوں کا کھو جانا جیسے غیر معمولی اور مافوق الفطرت واقعات شامل ہیں۔

ان ماوراء طبیعی داستانوں (یا واقعات) کی اصلیت جاننے کے لیے جو تفاسیر کی گئی ہیں ان میں بھی اکثر غیر معمولی اور مسلمہ سائنسی اصولوں سے ہٹ کر ایسی ہیں کہ جن کے لیے کم از کم موجودہ سائنس میں کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملتا۔

ان تفاسیر میں طبیعیات کے قوانین کا معلق و غیر موثر ہوجانا اور ان واقعات میں بیرون ارضی حیات (extraterrestrial life) کا ملوث ہونا جیسے خیالات اور تفکرات بھی پائے جاتے ہیں۔ ان گمشدگی کے واقعات میں سے خاصے یا تقریباً تمام ہی ایسے ہیں کہ جن کے ساتھ ایک معمہ کی خصوصیت وابستہ ہو چکی ہے اور ان کو انسانی عمل دخل سے بالا پیش آنے والے حوادث کی حیثیت دی جاتی ہے۔

بہت سی دستاویزات ایسی ہیں کہ جو یہ ظاہر کرتی ہیں کہ برمودا ٹرائی اینگل کو تاریخی اعتبار سے ملاحوں کے لیے ایک اسطورہ یا افسانوی مقام کی سی حیثیت حاصل رہی ہے۔ بعد میں آہستہ آہستہ مختلف مصنفین اور ناول نگاروں نے بھی اس مقام کے بیان کو الفاظ کے بامہارت انتخاب اور انداز و بیان کی آرائش و زیبائش سے مزید پراسرار بنانے میں کردار ادا کیا ہے۔

عوامی حلقوں میں مشہور قصے اپنی جگہ لیکن برمودا کے بارے میں بعض مفکرین کا خیال یہ ہے کہ اصل میں یہاں اٹھارویں اور انیسویں صدی میں برطانوی فوجی اڈے اور کچھ امریکی فوجی اڈے تھے۔ لوگوں کو ان سے دور رکھنے کے لیے برمودا کی مثلث کے افسانے مشہور کیے گئے جن کو قصص یا فکشن (بطور خاص سائنسی قصص) لکھنے والوں نے اپنے ناولوں میں استعمال کیا۔ اب چونکہ اڈوں والا مسئلہ اتنا اہم نہیں رہا اس لیے عرصے سے سمندر کے اس حصے میں ہونے والے پراسرار واقعات بھی نہیں ہوئے۔ مواصلات کے اس جدید دور میں اب بھی کوئی ایسا علاقہ نہیں ملا جہاں قطب نما کی سوئی کام نہ کرتی ہو یا اس طرح کے واقعات ہوتے ہوں جو برمودا کی مثلث کے سلسلے میں بیان کیے جاتے ہیں۔

برمودہ ٹرائی اینگل کا معمہ سائنسی بنیادوں پہ حل ہو چکا ہے بلکہ کئی معمے ایسے تھے ہی نہیں لیکن مشہور ہو گئے تھے۔ وہ ہوائی جہاز جو کہ پانی میں گر کر تباہ ہوئے تھے۔ ان کو، انہی پانیوں کی گہرائیوں سے جا کر نکال لیا گیا ہے کہ جو خود اس بات کو رد کرتا ہے کہ برمودہ تکون کے پانیوں میں نہیں جایا جا سکتا۔

برمودہ مثلث کے بارے میں تب پتہ چلا کہ جب جنگ عظیم کے دوران ٹریننگ پر گئے ہوائی جہازوں کا ایک پورا فلیٹ غائب ہو گیا۔ اس فلیٹ کے لیڈر کے جہاز کی جایئروسکوپ خراب ہو گئی تھی اور وہ ہوائی اور بحری جہاز کی دنیا کا ایک سب سے خوفناک مسئلے کا شکار ہوا کہ جسے پائلٹ ڈس اورینٹیشن
pilot Disorientation کہتے ہیں۔ اس دوران پائلٹ کا اپنے کنٹرول ٹاور سے مکمل رابطہ رہا اور اس فلیٹ کو نیویگیٹ کرنے کی کوشش کرتے رہے۔ اور کنٹرول ٹاور میں بھی موجود افراد کو یہ اندازہ ہو رہا تھا کہ اگر یہ مسئلہ درپیش رہا تو فیول ختم ہونے کے بعد سب جہاز گر جائیں گے۔ پهر ہوا بھی یہی ۔ کنٹرول ٹاور اور جہازوں کے مابین ہونے والی آخری وقت تک کی گفتگو بھی موجود ھے۔ لہذا ایسا نہیں ہوا تھا کہ یک دم چلتے جہاز کو کوئی حادثہ پیش آگیا۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ