بریکنگ نیوز

سنجیدہ بلاول میں قائدانہ صلاحتیں

f74b96b0-77ae-4e6b-bbad-76fa6bb15358.jpg

تحریر: عبدل مومن میمن

آج تک میں نے اہم مناصب پر فائز جتنے لوگوں کو اپنے ترجمئہ قرآن کا نسخہ پیش کیا ہے، ان میں سے کسی نے بھی افادیت کا کوئی سوال نہیں کیا۔ بس روایتی تعریف کہ “آپ نے جی بہت ہی بڑا کام کر لیا ہے”۔۔۔ (سوائے سید قائم علی شاہ صاحب کے کہ موصوف نے یہ عظیم تحفہ قبول کرنے کے بعد باقاعدہ پڑھا اور اس پر اپنی قیمتی آراء کا اظھار بھی فرمایا)۔

پچھلے دنوں جب یہ نسخئہ قرآن میں نے بلاول بھٹو زرداری صاحب (صاحب کا لفظ مجھے یہاں نہیں لکھنا چاہئے تھا کہ بلاول “صاحب” جیسے سطحی قسم کے تکلف سے بالاتر حقیقی معنوں میں ایک آزاد منش اور قائدانہ صلاحیتوں سے بھرپور نوجوان ہے۔) کی خدمت میں پیش کیا تو انہوں نے “آداب” کے تکلفات میں پڑ جانے کی بجائے یکدم مجھ سے سوال کر لیا کہ “اس ترجمے کی ایسی کونسی منفرد بات ہے دوسرے تراجم کے تقابل میں؟

جی ہاں! مجھے بھی آپ سب کی طرح یہی اندازہ تھا کہ بلاول بھی قرآن پاک کو تھام کر روایتی قسم کے “آداب” بجا لائے گا اور بات آنی جانی ہو جائے گی۔

لیکن ہوا یہ کہ بلاول کے سوال اٹھانے پر اب میں پریشان ہو گیا کہ یورپ سے تعلیم یافتہ اس نوجوان کے سامنے میں کونسی ایسی مثال پیش کروں، جس بات سے انہیں بخوبی اندازہ ہو کہ اس ترجمے کی کیا منفرد خاصیت ہے۔

میری انفاس یک لخت حظیرۃ القدس سے منسلک ہو گئیں اور میرے رب نے القاء فرمایا۔۔۔ “جی چیئرمین صاحب، اس ترجمے کی اولین خاصیت یہ ہے کہ یہ ترجمہ مکمل طور پر درباری کلچر سے ماوراء ہے”۔۔۔ کیا مطلب ہوا اس کا؟ میرے وضاحتی جملے پر بلاول نے دوسرا سوال سامنے رکھ دیا۔

میرا مطلب ہے کہ ایک ہوتے ہیں “علماء سوء” اور ایک ہوتے ہیں “علماء حق”۔۔۔! علماء سوء وہ تھے جنہوں نے دجال ضیاء کی پرستش میں محترمہ بینظیر بھٹو شھید کے متعلق فتوی جاری کیا تھا کہ “از روء اسلام کوئی عورت کسی اسلامی مملکت کی سربراہ نہیں ہو سکتی”۔۔۔ اور علماء حق وہ تھے جنہوں نے از روء قرآن ثابت کیا کہ “کسی بھی اسلامی مملکت کی عورت سربراہ ہو سکتی ہے”۔۔۔ تو میرا یہ ترجمہ ان علماء حق کے تتبع میں ایک انقلابی ترجمہ ہے جو کہ علماء سوء کے منہ پر ایک طمانچہ ہے! میری وضاحت پر بلاول کے چہرے پر ایک گہری سنجیدگی کے آثار عیاں ہوتے جا رہے تھے اور اس کے سینے میں کئی سوالات کا طلاطم برپا ہو رہا تھا۔۔۔ اسکے بعد شھید ذوالفقار علی بھٹو سے لیکر شاہ، میر اور محترمہ کی شہادت اور برصغیر کی سیاسی تاریخ پر بلاول سے جو بے لاگ قسم کی باتیں ہوئیں وہ آف دی ریکارڈ ہیں، وقت آنے پر ہی ان باتوں کو منظر پر لایا جا سکتا ہے۔

آپ اندازہ کریں کہ “بلاول نہ فقط قائدانہ صلاحیتوں سے معمور اپنے اندر میں ایک انقلابی نوجوان ہے بلکہ وہ ایک غیر روایتی قسم کا انتہائی بیدار مغز روشن دل اور بہت کچھ کرنے کے عزائم سے سرشار ہے! واقعی یہ قدرت کی طرف سے سندھ کی مٹی کی یہ انمول تخلیق ہمارے لئے انمول سرمایہ ہے۔ ہمیں بہر صورت بلاول کی قیادت کے متعلق سنجیدہ ہو کر ہی سوچنا پڑے گا۔ میں سمجھتا ہوں اسی میں ہی ہماری قومی بھلائی مضمر ہے”۔

آئیے ہم غیر سنجیدہ اندازِ گفتگو اور غیر حقیقی اندازِ فکر سے بالاتر ہو کر پیراشوٹ کے توسط سے ارض پاک پر اتارے گئے “اغیار” کی یلغار کو سمجھنے کی کوشش کریں اور بلاول کے متعلق کوئی سنجیدہ رائے قائم کریں۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ