بریکنگ نیوز

ووٹ کو آپ عزت دیں

akaas-2.jpg

تحریر :عامر شہزاد
مسلم لیگ نون کی آئینی مدت پوری ہونے کے ساتھ ہی پاکستان میں مسلسل دوسری بار جمہوریت کی فتح ہوئی ۔الیکشن کمیشن نے اگر ملک میں حلقہ بندیوں پر اٹھنے والے تنازعات کو خوش اسلوبی سے حل کر لیا تو 25جولائی کو پاکستان کی عوام اپنا اگلا حکمران چن رہے ہوں گے۔نگران وزیر اعظم جسٹس ناصر الملک پر تمام سیاسی پارٹیوں کا اتفاق بھی جمہوریت کی کامیابیوں کی طرف ایک قدم ہے۔ پاکستان میں دوسری جمہوری حکومت کا مدت پوری کرنا کسی معجزے سے کم نہیں۔ پاکستان پیپلز پارٹی اور اب مسلم لیگ نون دونوں جمہوری حکومتوں نے سیاسی مخالفتوں ،دھرنوں، احتجاجوں اور ہرتالوں کے باوجود اپنی اپنی مدت پوری کر کے ثابت کر دیا کہ جب تک سیاستدان اپنے احتجاج سیاست کے دائرہ کار میں رہ کر کرتے ہیں تو کسی دوسری طاقت کو مجال نہیں ہوتی کہ وہ جمہوریت پر شب خون مار سکے۔ مسلم لیگ ن کے ابتدائی دور میں ایسا تاثر پیدا کر دیا گیاتھا کہ حکومت بس ایک رات ہی کی مہمان رہ گئی ہے ، مگر پیپلز پارٹی سمیت چند جمہوریت پسند پارٹیوں نے نہ چاہتے ہوئے مسلم لیگ ن کی گرتی ہوئی حکومت کو اس لئے سنبھالا دیا تا کہ جمہوریت پر آمریت کے کالے سائے مسلط نہ ہو پائیں۔اس پائیدار اور قابل تعریف سیاسی عمل کے پیچھے میاں نواز شریف اور محترمہ بے نظیر بھٹو مرحوم کے میثاق جمہوریت نے ڈھال کا کام دیا تھا۔اسی ڈھال نے سابق صدر آصف علی زرداری کی کرپٹ حکومت کے پانچ سال بھی پورے کئے۔
مسلم لیگ ن کے پانچ سال کا جائزہ لیا جائے تو اس مدت میں کوئی ایک دن بھی بریکنگ نیوز کے بغیر نہیں گزرا۔ سب سے بڑی بریکنگ نیوز ،وزیر اعظم نواز شریف کوعدالتی فیصلے پر پارلیمنٹ کی رکنیت سے نااہل ہو کر گھر واپس جاناتھا۔نواز شریف حکومت کے پہلے سال ہی تحریک انصاف اور عوامی تحریک کا پارلیمنٹ کے سامنے 126دن کا ہنگامہ خیز دھرنا،پشاور کے آرمی پبلک سکو ل میں معصوم بچوں کی شہادت پر پوری قوم دہشت گردی کے خلاف جنگ میں فوج کے ساتھ ایک ہوئی ، تاریخی نیشنل ایکشن پلان مرتب کیا گیا۔ ملک کواندھیروں سے نکالنے کا وعدہ پورا کرتے ہوئے سسٹم میں1000 میگا واٹ بجلی ایڈ کی گئی ۔ امن و امان کے قیام میں سول حکومت فوج کی پشت پر کھڑی رہی۔ تاریخی فاٹا انضمام بل پا س کیا گیا، 70سالوں میں پہلی مرتبہ فاٹا کے عوام کو پاکستانی شہریوں کے برابر حقوق ملے۔ 189قوانین پاس کئے گئے جو ایک ریکارڈ ہے ، پیپلز پارٹی کے دور میں 93قوانین پاس کئے گئے تھے۔پی ایس ایل اور ویسٹ انڈیز کرکٹ ٹیم کے دورہ پاکستان کے بعدبین الاقوامی کرکٹ کی ملک میں واپسی کی امیدجیسی کامیابیوں کے ساتھ ساتھ حکومت کی ناکامیوں کی بھی ایک لمبی فہرست ہے ۔ان میں، ملکی تاریخ میں ریکارڈ قرضے لئے گئے جن سے قرضوں کا حجم 80ارب ڈالر سے تجاوز کر گیا۔ سول ملٹری تعلقات تصادم کا شکار رہے جس سے ملک میں عدم سیاسی استحکام پیدا ہوا۔ میاں نواز شریف ، خواجہ آصف کو اقامے پر نااہل ہونا پڑا، وزیر داخلہ احسن اقبال بھی اقانہ کیس بھگت رہے ہیں۔حکومت ختم نبوت ﷺ پر تنازعہ کھڑا کرنے کی مرتکب ہوئی جس کے نتیجہ میں فیض آباد دھرنے نے 22روز عوام کو یرغمال کئے رکھا ۔دھرنے کو ہٹانے کے نتیجے میں کئے گئے آپریشن کے بعد حکومتی رٹ کمزور ہوئی۔
مسلم لیگ ن کی کامیابیوں اور ناکامیوں کے بعدپی ٹی آئی کا جائزہ لیتے ہیں،کیونکہ پی ٹی آئی اپنے آپ کو اگلی حکومت کا ’’متفقہ‘‘ حقدار سمجھتی ہے، اس کے سیاسی انداز سے پاکستان میں عدم برداشت کی سیاست کو ایساؤ فروغ ملا کہ بات گالی سے ہوتی ہوئی جوتے تک پہنچی ،وہاں سے چہروں پر سیاہی سے دل نہ بہلا تو سیدھی بات تھپر تک پہنچی۔پی ٹی آئی کے پانچ سال تو چھوڑیں پچھلے پانچ دن کی کارکردگی پرنظر ڈالیں تو اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ وہ ایٹمی قوت پاکستان پر حکمرانی کے کتنے اہل ہیں ۔ نگران سیٹ اپ کے لئے وزیر اعظم کے نام پر شور شرابا، پنجاب کے نگران وزیر اعلی کے لئے ناصر کھوسہ کے نام پر متفق ہونے کے بعد یو ٹرن لینا، اور جب ناصر درانی کا نام دیا گیا توانہوں نے یہ کہہ کر معزرت کر لی کہ وہ پنجاب جیسے بڑے صوبے کے وزیر اعلی کے منصب کے اہل نہیں۔فاروق بندیال جیسے مجرمانہ ریکارڈ رکھنے والے کو پہلے پارٹی میں عمران خان نے خود خوش آمدید کہا اور بعد میں سوشل میڈیا پر ان کے کرتوت دیکھ کر پارٹی سے نکال دیا۔عمران خان کی پانچ سالہ مدت ایسے کارناموں سے بھری پڑی ہے۔نواز شریف کی نااہلی کے بعد وزیر اعظم کی نامزدگی کے موقع پر اسمبلی میں شاہد خاقان عباسی کے مقابلے میں پی ٹی آئی کاشیخ رشید کو وزیر اعظم نامزد کرنا بھی کوئی سنجیدہ سیاسی عمل نہیں تھا۔عمران خان نے جب پرویز مشرف کے خود ساختہ انقلاب کا ساتھ دیا تھا تو انہیں جلد احساس ہو گیا تھا کہ جہاں ایک نیام میں دو تلواریں اکٹھی نہیں رہ سکتیں وہاں منافق سیاسی نظام کے ایک بغل میں دو ’’استرے‘‘ بھی نہیں رہ سکتے ۔
آنے والے انتخابات میں عوام کو فیصلہ سوچ سمجھ کر کرنا پرے گا۔نواز شریف نااہلی کے بعد ووٹ کو عزت دو کے سیاسی بیانئے اور شہباز شریف ترقیاتی بیانئے کے ساتھ انتخابی میدان میں جانے کا عزم رکھتے ہیں ۔میاں صاحب ’’ مجھے کیوں نکالا‘‘ کے سوال میں چھپے تلخ حقائق سے خطرناک حد تک پردہ اٹھاچکے ہیں ،حسب عادت انہوں نے عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ سے ٹکر لی ہے۔ طاقتور اداروں سے ٹکرانے کی ہمت نواز شریف میں میثاق جمہوریت پر دستخط کے بعد ملی۔میثاق جمہوریت کے بعد سیاسی پارٹیوں کا فرض بنتاتھا کہ وہ اپنی ہزار لڑائیوں اور مخالفتوں کے باوجود کم از کم اس بنیادی نقطے پر تو متفق ہو جاتے کہ سیاسی پارٹیوں کی موجودگی میں کوئی طالع آزما جمہوریت پر چڑھائی نہ کر سکے۔مگر ہمارا سیاسی المیہ دیکھیں میثاق جمہوریت کو تحریک انصاف آج تک دو بڑی جماعتوں کاآپس میں مک مکا سمجھتی آ رہی ہے۔ میثاق جمہوریت کے فلسفے کو سمجھنے کی بجائے ،اگلی باری تمہاری، بڑے بھائی چھوٹے بھائی ، بڑا کرپٹ چھوٹا کرپٹ کہہ کر ان پر الزامات لگاتی رہی ۔سیاستدان جب تک آپس میں سیاسی لڑائی کو انا کا مسئلہ سمجھتے رہیں گے ان پر ’’دوسرے‘‘ حکمرانی کرتے رہیں گے۔تر کی کا سیاسی نظام ہمارے سیاستدانوں کی آنکھیں کھولنے کے لئے کافی ہے۔ ووٹ کی عزت کسی دوسرے سے مانگنے والا احمقوں کی جنت میں رہتا ہے ،کیونکہ ووٹ لینے والے حکمران جس دن خود ووٹ کو عزت دیں گے ، اس دن کسی دوسرے کو یہ ہمت نہیں ہو گی کہ وہ حکمرانوں کی لی ہوئی ووٹ کی طاقت کے سامنے کھڑاہو سکے۔ اللہ کرے آنے والے انتخابات میں عوام ایسے باہمت رہنما چنے جو ووٹ کو خود عزت دئیں۔آمین

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ