بریکنگ نیوز

سکائی ٹیک کمشنرنظام کی بدولت چینی دیہاتوں میں غربت کا خاتمہ

Untitled.png

(خصوصی رپورٹ):۔ زراعت اور کاشتکاری کے حوالے سے جو مربوط رہنمائی اور ٹریننگ سکائی ٹیک کمشنر نظام کے زریعے سے چینی دیہاتوں میں کاشتکاروں کو حاصل ہو رہی ہے اس کا کریڈٹ جنوب مشرقی چینی صوبے فوجیان کے نانجنگ گائوں کی اکیاون سالہ دیہاتی عورت وو شوفوئینگ کو جاتا ہے جو ایک عشرے قبل تک اس تمام تر امور سے نابلد تھی کہ انگوروں کو کیسے اگایا جاتا ہے لیکن آج وہ وٹی کلچر کے باعث ٹریننگ حاصل کر کے ان تمام کاشتکاری امور میں مہارت حاصل کر چکی ہیں۔ واضح رہے کہ سکائی ٹیک کمشنر نظام سب سے پہلے فروری 1999میں تجرباتی بنیادوں پر نانپنگ کے علاقے میں شروع کیا گیااس ضمن میں تجرباتی بنیادوں میں سکائی ٹیک کے 225ہنرمند افراد کو انتظامی بنیادوں پر 215دہیی علاقوں میں تعینات کیا گیا اور ٹیکنالوجی سے دیہات کہ عام لوگوں کو فاہدہ پہنچانے کے لیے اور انسانی وسائل میں اضافہ کے لیے اور دیہی سطع پر غربت کے خاتمے کے لیے ان عواملکو استعمال کیا گیا اور ان سے استعفادہ حاصل کیا گیا۔ اس حوالے سے اکیاون سالہ دیہی خاتوں وئو شوفئینگ نے کہا کہ سکائی ٹیک کمشنز نے مجھے بیج کی ساخت اور بیج بونے سے کاشت کے تمام مراحل کے حوالے سے بہتر انداز میں رہنمائی کی اور اس فراہم کردہ تکنیکی مہارت کا ہی نتیجہ ہے کہا آج وہاپنے انگور کے فارم کی دیکھ بھال بہتر انداز میں کر رہی ہیں۔ کاشتکاری کے ساتھ ساتھ وئو کو سکائی ٹیک کمشنر نطام کے تحت مارکیٹنگ کے رموز سے بھی آگاہی فراہم کی گئی۔ اور آج وہ اس تکنیکی مہارت کے باعث سالانہ ایک لکھ سے زائد یوآن اپنے انگور کے فارم سے حاصل کر رہی ہیں اور اس خوشحالیکے باعث انکا خاندان آج ائیک بہتر اور بڑے گھر میں خوشحالی کیساتھ رہ رہے ہیں۔ اس حوالے سے وئو اپنے گائوں کی واحد مثال نہیں ہیں جنہوں نے جدید ٹیکنالوجی سے استعفادہ حاصلکرتے ہوئے غربت سے نجات حاصل کی اسکے علاوہ چوہانسی گائوں جو صرف بانس کی کاشتکاری کے حوالے سے شہرت رکھتا تھا وہاں پر بھی ایسی بہت سے مثالیں دیکھنے میں آرہی ہیں۔ ان دیہاتوں علاقوں میں جو بانس کی فصل پر انحصار کرتے ہیں پیداواری قلت اور دیگر مسائل سے نبر آزما رہتے تھے اس کیساتھ ساتھ انکے صنعتی مسائل میں بھی روز بہ روز اضافہ ہو رہا تھا۔ تاہم سکائی ٹیک کمشنرز نظام کی بدولت نئی ٹیکنالوجی کو بروئے کار لایا گیا اور سائینسی اسلوب کی بنیاد پر فصل کو استوار کیا گیا اور کاشتکاری کو بہتر انداز میں مربوط انداز میں مزین کیا گیا جس سے نہ صرف بانس کی کاشت میں خاطر خواہ اضافہ ہوا بلکہ بہت سے خاندانوں کو بہتر آمدن کا مستقل زریعہ بھی حاصل ہو گیا۔ اب جدید ٹیکنالوجی سے استعفادہ حاصل کرنے کے بعد چیکو بانس کی پیداوار میں فی ہیکٹر اضافے کا باعث ہے اور گائوں کی اقتصادی حجم میں بھی کئی ملین کا اضافہ ہوا ہے۔ اس طرح سے نانپنگ سکائی ٹیک کمشنر نظام ملک بھر پر پھیل رہا ہے اور امید ظاہر کی جارہی ہے کہ اس کمشنر نظام کو ملک بھر پھیلانے پر غور کیا جا رہا ہے۔ اب تک نانپنگ کی جانب سے دس وفود کی صورت 8483سکائی ٹیک کمشنرز کو تکنیکی مہارت کے پھیلائو کے لیے مختلف دیہاتوں میں بھیج چکا ہے اس ضمن میںگزشتہ سال 1282لوگوں کو تکنیکی مہارت کے حوالے سے ملک بھر کے طول وعرض میں بھیجا گیا۔اس کیساتھ ساتھ نانپنگ نے ملک کے دیگر انجینرئینگ اداروں بشمول چائینیز ایکیڈیمی آف انجیئرنگ اور چائینیز ایکیڈیمی آف سائنس اینڈ ٹیکمالوجی ٹشنگوا کیساتھ اشتراک شروع کر چکا ہے۔ سکائی ٹیک کمشنز سسٹم زراعت اور دیگر سائنسی ریسرچ کے شعبوں اور دیہی ترقی اور دیہی لوگوں کی فلاح دیہی ٹوورازم کے حوالے سے بھر پور کام سر انجام دے رہے ہیں۔ اس ھوالے سے سیکرٹری نانپنگ میونسپل کمیٹییوآن ائی نے کہا کہ نانپنگ ایک ایسا علاقہ ہے جو اسی فیصد جنگلات سے گھرا ہوا ہے اور سکائی ٹیک کمشنرز کے اگلے مرحلے کے لیئے منصوبہ ماحولیاتی ماہرین کی خدمات حاصل ہونگی۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ