بریکنگ نیوز

چین ،متحدہ عرب امارات بیلٹ اینڈ روڈ تعاون کی جانب پر عزم

xkj102-ap1.jpg

In this Wednesday, July 18, 2018 photo, a sign reading "UAE Chinese Week" in Chinese and Arabic is projected onto the Bus Al Arab luxury hotel to celebrate the UAE Chinese Week in Dubai, United Arab Emirates. Chinese President Xi Jinping is heading to Abu Dhabi in his first trip to the United Arab Emirates as the leader of China as the two countries look to strengthen trade ties and expand investment. (AP Photo/Kamran Jebreili)

(خصوصی رپورٹ):۔ متحدہ عرب امارات جسے صحرائی پھول بھی کہا جاتا ہے، خلیج فارس کے کنارے جنوب مشرقی جزیرہ نمائے عرب میں واقع ہے، متحدہ عرب امارات نے اعلی سطعی چینی مہمانوں کا اپنی سرزمین کو Chinese Red’ سے سجاکر اپنے خطے میں بھر پور استقبال کیا،واضح رہے کہ گزشتہ 29سالوں میںچینی صدر شی جنپگ کی جانب سے متحدہ عرب امارات کا یہ پہلاریاستی دورہ ہے، اس سے قبل چین کے کسی صدر نے انتیس سالوں میں اس خطے کا سرکاری دورہ نہیں کیا ہے۔گزشتہ جمعے کے روز چینی صدر شی جنپگ کے دورہِ متحدہ وعرب امارات کے موقع پر یو اے ای کے نائب صدر اور وزیر اعظم الشیخ محمد بن الرشید المختوم، اور ابو ظہبی کے ولی عہدشیخ محمد زید النہیان کی جانب سے طرفین کے مابین جامع اسٹرٹیجک تعلقات کو مضبوط کرنے کے حوالے سے مثبت لائحہ عمل طے کیا گیا۔اس کے علاوہ چین اور متحدہ عرب امارات کے مختلف شعبوں میں دو طرفہ تعلقات اور باہمی روابط کو مضبوط کرنے کے عزم کا بھی اظہار کیا گیا اور مستقبل کے حوالے سے طرفین کو باہمی روابط کو ٹھوس بنیادوں پر استوار کرنے کے عزم پر بھی سمجھوتہ کیا، چینی صدر شی جنپگ کی جانب سے انکے بیرونی دوروں کے حوالیسے یو اے ای انکے دورے کا پہلا اسٹاپ تھا اور چینی صدر کے دوبارہ منتخب ہونے کے بعد کسی بھی ملک کے ریاستی دورے کا یہ پہلا دورہ اسٹاپ تھا، متحدہ عرب امارات کی حکومت نے چینی صدر شی جنپگ کو انکے دورہِ یو اے ای پر عظیم استقبالیہ دیا اور بارہ جنگی جہازوں سے چینی صدر کو سلامی دی گئی، اس کے علاوہ ان کی متحدہ عرب امارات آمد پر آتش بازی کی گئی، گھوڑوں کی کیولری اور اکیس توپوں سے سلامی دی گئی۔چینی صدر شی جنپگ کے دورہِ متحدہ عرب امارات کے دورہ کو بہت اہمیت کے حوالے سے دیکھا جا رہا ہے، اس دورے کے عوامل اور محرکات کے حوالے سے ولی عہد ابو ظہبی شیخ محمد بن زید النہیان نے کہا کہ چینی صدر کے دورے سے دونوں ممالک کے مابین باہمی تعاون کے حوالے سے ایک نئے دور کا آغاز ہو گا اور انہوں نے امیہد ظاہر کی کہ چینی صدر کے دورے طرفین کے لوگوں کو خوشحالی حاصل ہوگی۔اس دورے کے موقع پر چینی صدر کوابو ظہبی کے سب سے بڑے سولِ ایوارڈآرڈر آف زید سے نوازا گیا۔اس کے علاوہ ولی عہد کی جانب سے چینی صدر کوایک عربی گھوڑا بھی تحفے میں دیا، واضح رہے کہ یو اے ای کے شاہی خاندان کی جانب سے عربی گھوڑے کا تحفہ سربراہانِ مملکت کو تعلقات اور دو طرفہ تعلقات کی مضبوطی کے حوالے سے ایک یادگار کے طور پر دیا جاتا ہے۔ بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ کی تعمیر کے حوالے سے چین اور متحدہ عرب امارات دونوں قدرتی شراکت دار ہیں کیونکہ جب سے چین نے بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹ کی تعمیرِ کے منصوبے کو دنیا کے سامنے پیش کیا ہے ولی عہد نے اس منصوبے کے تحت دنیا میں سلک روٹ کی بحالی کے حوالے سے سرگرم کردار ادا کرنے کی خواہش کا اظہار کیا۔بیلٹ اینڈروڈ پراگرام کے تحت ہی متحدہ عرب امارات چینی برامدات کے حوالے سے دنیا کا دوسرا بڑا ملک ہے اور عرب دنیا میں یو اے ای چینی پراڈکٹس کا سب سے بڑا خریدار ہے دوسری جانب چین متحدہ عرب امارات کا سب سے بڑا تجارتی شراکت دار ہے اور دونوں ممالک انرجی، فنانس، پیداواری صلاحیت اور ہائی ٹیکنالوجی اشیاء کے حوالے سے مثبت شراکت دار ہیں۔ چینی صدر شی جنپگ کی جانب سے انکے دورہِ متحدہ عرب امارات کے حوالے سے انکے دستخط کردہ آرٹیکل میں انہوں نے بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کی تکمیل کوچین اور متحدہ عرب امارات کو مشترکہ مستقبل کے حوالے سے ایک کمیونٹی سے تعبیر کی جس سے دونوں ممالک کے مابین اسٹرٹیجک پارٹنر شپ زیادہ مضبوط ہوگی۔ اس کے علاوہ اس دورے کے موقع پردونوں ممالک نے باہمی اشتراک کے حوالے سے لائحہ عمل کی میکنزیم کو اجاگر کیا تاکہ طرفین باہمی مفادات کو یقیینی بنا سکیں۔اس طرح سے چینی صدر شی جنپگ کے دورہِ متحدہ عرب امارات کے دفاعی معاہدات اور اسٹرٹیجک شراکت داری کے حوالے سے اور پیپل تو پیپل تعلقات کی مضبوطی کے حوالے سے میکنزیم ڈیویلپ کیا گیا تاکہ دونوں اطراف کی عوام کی باہمی تجارت، ترقی، خوشھالی کویقینی بنایا جا سکے۔ چینی صدر شی جنپگ کا دورِ متحدہ عرب امارات اس حوالے سے بھی بہت اہمیت کا حامل تھا کیونکہ کیونکہ متحدہ عرب امارات چین کیساتھ طویل مدتی اقتصادی، ثقافتی، تجارتی، اور سرمایہ کاری سے متعلق تعلقات کے خواہاں ہیں اس ھوالے سے متحدہ عرب امارات کے چین میں تعین سفارتکار علی الداہری نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کے سامنے چین ایک رول ماڈل کی سی صورت ہے اور تمام عرب ممالک اس حوالے سے چین کیساتھ حقیقت پسندانہ، دوستانہ اور باہمی مفادات پر مبنی دو طرفہ تعلقات کی مضبوطی اور بڑھوتری کے خواہاں ہیں اور طرفین کے دو طرفہ تعلقات کی بنیاد باہمی احترام پر ہو، گزشتہ دنوں چین اور متحدہ عرب امارات کے وزاراء کے مابین چین۔متحدہ عرب امارات تعاون فورم کے حوالے سے ملاقات واقع کی گئی اور اس ملاقات کے موقع پر چینی صدر شی جنپگ نے اس عزم کا اظہار کیا کہ چین اور متحدہ عرب امارات مستقبل کے حوالے سے مضبوط اسٹرٹیجک شراکت داری کے خواہاں ہیں تاکہ طرفین کے مشترکہ ڈیویلپمنٹ کے لیئے جامع تعاون کے لیے تمام مراحل طے کیئے جائیں۔ اس تناظر میں چین اور متحدہ عرب امارات کے مابین اعلی سطعی تعلقات کا فروغ دو طرفہ تعلقات کے ضمن میں ایک خوشگوار اور مثبت باب کا آغاز ثابت ہوگا اور دونوں اطراف کی عوام کے مابین مشترکہ کمیونٹی اور باہمی مفادات پر مبنی ٹھوس اور خوشحال مستقبل کی بنیاد فراہم کر سکتے ہیں اس طرح سے چین اور متحدہ عرب امارات کے مابین مثبت اور باہمی دو طرفہ تعلقات کا فروغ دیگر ممالک کے لیے ایک رول ماڈل کی طرح پیش کیا جا سکتا ہے تاکہ باہمی مفادات کی بناء پر مختلف ممالک اپنے عوام کے لیے ایک مشترکہ کمیونٹی کی حیثیت اختیار کر سکیں۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ