بریکنگ نیوز

چین اور افریقی ممالک تجارت اور سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے پر عزم

FOCAC.jpg

(خصوصی رپورٹ):۔ چین اور افریقی ممالک نے گزشتہ تین سالوں میں باہمی اور دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالے سے اہم ترین کامیابیاں حاصل کی ہیں جس کی بناء پر طرفین میں باہمی تجارت اور اقتصادی تبادلوں اور پھیلائو کے حوالے سے تمام عوامل کو اہم ترین اور کلیدی اہمیت حاصل ہوئی ہے اس طرح سے اس دو طرفہ تجارت اورسرمایہ کاری سے جہاں افریقی ممالک کی عوام کو بہت سے معاشی فواہد حاصل ہوئے ہیں وہیں طرفین میں باہم اعتماد سازی کے ماحول کو تقویت حاصل ہوئی ہے۔ حالیہ جاری اعدادوشمار کے مطابق چین اور افریقی ممالک کے مابین گزشتہ سال 2017میں دو طرفہ تجارتی حجم کی شرح170بلین ڈالر ریکارڈ کی گئی ہے ۔ جو گزشتہ سال کے مقابلے میں 14فیصد زائد رہی ہے۔ اور یہ شرح چین کی غیر ملکی مجموعی دو طرفہ تجارت کے حوالے سے دو فیصد اضافے کے حوالے سے بھی ریکارڈ کی گئی ہے۔ اس کیساتھ ساتھ یہاں یہ امر بھی قابلِ توجہ ہے کہ گزشتہ 9سال میں افریقی ممالک کیساتھ غیر ملکی تجارت کے حوالے سے چین سب سے بڑا شراکت دار بن کر سامنے آیا ہے۔ گزشتہ ایک سال میں 2017سے افریقی ممالک کیساتھ چینی برامدات کی شرح میں 32.8فیصد کا اضافہ ہوا ہے اور اسکی مجموعی مالیت میں 75.26بلین ڈالر کا ضافہ ہوا ہے۔اور گزشتہ پندرہ سالوں میں چین کی افریقی ممالک میں سرمایہ کاری کی شرح میں سو فیصد اضافہ ہوا ہے اور آج چینی سرمایہ کاری 100بلین ڈالر سے تجاوز کر چکی ہے۔ جنوبی افریقہ کی بندرگاہ پورٹ الزبتھ میں چین کے تعاون سے قائم پہلی آٹو موبائل فیکٹری سالانہ ہزاروں ہیوی ٹرک تیار کی رہی ہے جس سے ان افریقی ملک میں تیزی سے بڑھتی مواصلات کی ضروریات کو بہت حد سپورٹ حاصل ہو رہی ہے۔ دوسری جانب افریقہ کے ایک اور ملک نائجیریا میں چینی انٹر پرائسز چینی معیار کے تحت ریلوے نیٹ ورک کو فعال کر چکی ہے جس سے سفری اور لاجسٹکس کی سہولیات حاصل ہو رہی ہیں ، اس ابوجہ۔کندن ریلوے لائن سے مقامی لوگ بہترتیز رفتار اور سہولیات سے حامل سفر سے مستفید ہو رہی ہیں ، اسی طرح ملاوی میں 60سے زائد چھوٹی ، بڑی اور درمیانے درجے کی انٹر پرائسز کی مدد سے مقامی آبادی کو بہتر روزگار کے مواقع فراہم کیئے گئے ہیں اور مقامی آبادی کو کم قیمت پر بہتر معیاری اشیاء کی فراہمی یقینی بنائی گئی ہے۔ اسی طرح سے چینی سرمایہ کاری سے روانڈا میں کپڑے کی صنعت کو بھر پور اجاگر کیا گیا ہے جس سے مقامی آبادی کو کپڑے اور ٹیکسٹائل کے شعبے میں بہتر روزگار کے مواقع مہئسر آئیں ہیں۔ ان عوامل سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چینی سرمایہ کاری سے افریقی ممالک کو ترقی کے دھارے میں لانے اور ڈیویلپمنٹ کی رفتار بڑھانے کے لیے چین کیسے سنجیدہ کوششوں کو جاری رکھے ہوئے ہے۔ اس ضمن میں انتظامی مشاورتی امور سے متعلق ایک فرم میکنزے اینڈ کمپنی نے 2017کی ایک رپورٹ میں واضح کیا کہ چینی انٹر پرائسز نے بہتر انتظامی تجربات، سرمایہ کاری اور جدت پسندی سے متعلق امور کی بناء پرافریقی معیشت کو مستحکم کیا ہے اور چینی انٹر پرائسز جو افریقی ممالک میں مختلف شعبوں میں کام کر رہی ہیں روزگار کے حوالے سے مقامی آبادی کو ترجیع دیکر لوگوں کے معہیارِ زندگی کو بہتر بنا رہی ہیں ۔ گزشتہ تین سالوں میں 48سے چینی انٹر پرائسز نے جو افریقی ممالک میں فعال ہیں انکی جانب سے افریقی لوگوں کے لیے میعاری نئی پڑاڈکٹس لانچ کی گئی ہیں اور اس طرح سے مقامی آبادیوں کی ضروریات کے پیشِ نظر نئی ٹیکنالوجیز بھی متعارف کروائی جا رہیں ہیں۔ ایک حالیہ سروے کے مطابق جس میں پچاس افریقی اعلی حکام کے انٹرویو کیئے گئے ان کے مطابق چین جس طرح سے افریقہ کی مقامی آبادی کو مدنظر رکھ کر انکی زندگیوں میں سہولیات کی فراہمی یقینی بنا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ چینی تعاون سے متعلق انٹر پرائسیزافریقی ممالک میں تیزی سے انفراسٹرکچر منصوبوں کی تکمیل یقینی بنا رہئے ہیں دوسری جانب افریقی میڈیا اس حوالے سے یقین رکھتا ہے کہ چین اور افریقی ممالک بحثیت ترقی پزیر ممالک باہمی اور دو طرفہ تجارت اور کے حوالے سے بڑے پیمانے پر استطاعت رکھتے ہیں ۔ اس طرح سے چین کی تجارت اور سرمایہ کاری سے نہ صرف افریقی ممالک کی مقامی صنعت اور انفراسٹرکچر کو اہمیت حاصل ہوئی ہے بلکہ دیگر شعبوں بشمول روزگار، بہتر ٹیکنالوجی کو بھی آگے بڑھنے کے خاطر خواہ مواقع مئیسر آ رہے ہیں اور چین جس طرح سے افریقی ممالک میں سرمایہ کاری کو آگے بڑھا رہا ہے اس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین افریقی ممالک کی آزادانہ اور خود مختار ڈیویلپمنٹ کا خواہاں ہے۔ دوسری جانب افریقی ممالک میں تجارت اور سرمایہ کاری کے فروغ کے حوالے سے چین نے افریقہ میں ای کامرس کے فروغ کا ایک نیا رجحان دیا ہے، اس کی مدد سے بہت سی چینی انٹر پرائیسز اور کمپنیز افریقہ کمپنیز کیساتھ انٹر نیٹ کی مدد سے باہمی تجارت اور عملی تعاون کی ایک نئی مثال لیکر آگے بڑھ رہی ہیں اور مارکیٹ کے قواعدو ضوابط کیساتھ افریقی میعشت کو انفارمیشن ٹیکنالوجی سے مستفید کیا جا سکے۔ اس طرح سے ای کامرس کے شعبے میں رواں سال جون کے مہینے میں چین اور افریقی ممالک کے مابین بین السرحد ای کامرس کے فروغ کے حوالے سے پہلے باضابطہ پلیٹ فارم CA.B2B-COM کا آغازبیجنگ میں کیا گیا۔اور آج صورتحال یہ ہے کہ آن لائن مارکیٹنگ کے سبب بہت سی افریقی پراڈکٹس تیزی سے چین میں فروغ پا رہی ہیں جس میں ایتھوپیا کی کافی، کینیا کی بلیک ٹی، اور جنوبی افریقہ کے میکاڈیمیا بادام، تیزی سے مارکیٹ پزیرائی حاصل کر رہے ہیں۔ اسی طرح کم مالیت کی بیشتر چینی مصنوعات تیزی سے ای مارکیٹس کے زریعے سے افریقی گھروں کا حصہ بن رہی ہیں ۔ جس کی ایک واضح مثال چین کا ای کامرس اور آن لائن کے شعبے میں بڑا نام علی بابا نے گزشتہ تین مالی سالوں میں جس قدر تیزی سے بزنس حاصل کیا ہے وہ اپنی مثال آپ ہے اور اس کی شرح میںبا لترتیب ، 188فیصد، 388 فیصد اور62فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔ افریقی ممالک میں لگ بھگ 330ملین انٹر نیٹ صارفین میں سے بیس فیصد لوگ آن لائن شاپنگ سے استعفادہ حاصل کرتے ہیں اس طرح سے افریقہ کی ای کامرس مارکیٹ تیزی سے فروغ پا رہی ہے۔ اسی طرح سے افریقہ میں ای کامرس مارکیٹ کے فروغ سے موبائل ایپلیکیشنز کے زریعے سے ادائیگی کے نظام کو تیزی سے فروغ حاصل ہو رہا ہے اس امر کا اندازہ اس حقیقت سے لگایا جا سکتا ہے کہ افریقہ کے صحارا ریگستان میں موبائل کے زریعے سے ادائیگی کرنے والے صارفین کی تعداد338ملین لوگوں تک پہنچ چکی ہے۔ جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ افریقہ کی ای کامرس مارکیٹ کس قدر تیزی سے فروغ پا رہی ہے۔ اسی طرح چائینیز پیمنٹ سروسز بشمول الیپے اور ویچیٹ بہت سے افریقی ممالک میں اپنی خدمت فراہم کر رہی ہیں ۔ اس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین اورارفریقی ممالک کے مابین دو طرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کا ایک شاندار مواقع موجود ہیں اس ضمن میں مصری اخبارالہرام نے اپنے ایک حالیہ آرٹیکل میں لکھا ہے کہ چین اور افریقی ممالک نے گزشتہ پانچ سالوں میں تجارت اور سرمایہ کاری کے حوالے سے اہم ترین اہداف حاصل کیئے ہیں بالخصوص جب سے چین اور افریقی ممالک کے مابین دس معاہدات تشکیل پائییں ہیں ، اس ضمن میں رواں ہفتے سے جاری بیجنگ سمٹ2018جو چین اور افریقی ممالک کے مابین باہمی تجارت اور علمی تعاون کو ایک نئی جہت دیگا اور باہمی دوطرفہ تعلقات تجارت اور دوستانہ تعلق کو نئی بلندیوں پر پہنچانے کا سبب بنے گا۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ