بریکنگ نیوز

چین :عالمی سطع پر انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کیلئے ایک متحرک کردار

chinese-reform-plan-leaks-and-the-stock-market-surges.jpg

(خصوصی رپورٹ):۔ چین نے 2001میں عالمی تجارتی تنظیم (WTO)میں شمولیت کے بعد سے عالمی سطع پر انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ اور اس کے قوانین وضوابط کو عالمی معیار کے اسٹینڈرڈز کے مطابق ڈھالنے کے حوالے سے نہ صرف ایک کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ بلکہ اس ضمن میں متعلقہ عوامل کی قانون سازی یقینی بناتے ہوئے نہ صرف خامیوں کو درست کیا گیا بلکہ متعلقہ قوانین اور ضوابط پر نظر ثانی کی گئی اور عالمی تجارتی تنظییم میں شمولیت کے بعد سے چین کی حکومت نے متعلقہ عدالتی وضاحتوں اور قواعدو ضوابط میں تیزی سے تمام متعلقہ عوامل کی تبدیلیوں کو یقینی بنایا ہے۔ ایک طرف یہ ایک حقیقیت ہے کہ عالمی سطع پرٹیکنالوجی ٹرانسفر کے حوالے سے کوئی واضح کثیر الجہتی قواعد اور قوانین موجود نہیں ہیں ۔ تاہم چینی حکومت نے 2001میں شمولیت کرنے سے قبل اس امر کی یقین دہانی یقینی بنائی تھی کہ غیر ملکی سرمایہ کاری اور ٹیکنالوجی منتقلی کے حوالے سے حکومتی منظوری کسی بھی قسم کے حوالے سے ممکنہ رکاوٹ کا باعث نہیں بنے گی۔ اس ضمن میں چینی حکومت نے گزشتہ اٹھارہ سالوں میں انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کے حوالے سے ایک شفاف اور مستحکم حکموتِ عملی یقینی بنائی ہے۔ اسی طرح سے چین نے قانونی حکمتِ عملی اور انتظامی عوامل کو کبھی بھی ایک ممکنہ آلہ کار کے استعمال نہیں کیا ہے جس سے غیر ملکی انٹر پرائسزٹیکنالوجی منتقلی کے حوالے سے مجبور کیا جا سکے یا اس طرح کے کسی بھی عمل سے غیر ملکی انٹر پرائسز کو ملک میں سرمایہ کاری کے حوالے سے مجبور کیا جا سکے۔ ٹیکنالوجی منتقلی کے حوالے سے جو عوامل ریکارڈ پر موجود ہیں وہ انفرادی اور مختلف انٹر پرائسز کی جانب سے انکی رضامندی کی وجہ سے واقع ہوئی ہیں اور اس کے پیچھے انکے مارکیٹ سے متعلقہ فواہد کا عنصر غالب رہا ہے۔ دوسری جانب انفرادی سطع پر ٹیکنالوجی منتقلی کے حوالے سے انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے حوالے سے کو الزامات سامنے آئے ہیں ان کے ازالے کے حوالے سے تمام متعلقہ ایشوز کو عدالتی حکام کی جانب بھیجا جاتا ہے تاکہ شفاف تحقیقات کی مدد سے ان معاملات کو درست کیا جا سکے۔ اس ضمن میں امریکہ کی جانب سے چین پر انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کے حوالے سے ممکنہ ناکامی بارے جو الزامات عائد کیئے جا رہے ہیں وہ سراسر زمینی حقائق کے منافی اور حقائق کو توڑ مروڑ کر عالمی سطع پر چین کو بدنام کر نے کے حوالے سے عائد کیئے جا رہے ہیں ۔ امریکی قیادت کی جانب سے یکطرفہ انداز میں چین کے خلاف جس طرح سے تجارتی جنگ کا آغاز کیا گیا ہے اور امریکی قیادت کی جانب سے چین کے خلاف سیکشن۔301کے تحت تحقیقات اور ضمنی سیکشن۔301کے تحت کو تحقیقات چین کے خلاف نظرِ ثانی کی جا رہی ہے۔ ان کو دیکھتے ہوئے یقینی طور پر کہا جا سکتا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ اپنے مقاصد کے حصول اور مفادات کو یقینی بنانے کے لیے انصاف اور شفاف عوامل کو یکسر نظر انداز کیئے ہوئے ہیں۔ اسی طرح سے چین کے انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے حوالے سے امریکہ یکسر جھوٹے الزامات کو بڑھانے میں مصروف ہے تاکہ عالمی سطع پر اس ضمن میں چین کی ساکھ کو متاثر کیا جا سکے۔ اور اس ضمن میں چینی قوانین کو غلط انداز میں تشریح کر کے دنیا میں پیش کیا جا رہا ہے۔ اس طرح سے امریکی قیادت خود غرضانہ اور چھوٹی سوچ کا مظاہرہ کرتے ہوئے چین کی ساکھ کو متاثر کرنے کے لیے کوئی بھی موقع ضائع نہیں کرنے دیتا۔ دوسری جانب امریکہ جس طرح سے تجارتی تحفظ سے متعلق پالیسز کو اجاگر کر رہا ہے اور یکطرفہ پالیسی میکنیزیم کو لیکر آگے بڑھ رہا ہے اسے سے عالمی سطع پر انٹی لیکچوئی پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کے حوالے سے سنگین مسائل سر اٹھا رہے ہیں ۔اور امریکہ اور دیگر ممالک کی انہی کوششوں کے سبب حالیہ چند برسوں میں انٹی لیکچوئل پراپرٹی کے تحفظ کے حوالے سے بہت سے نئے چیلنجز بھی سامنے آئے ہیں ۔ واضح رہے کہ بین الاقوامی انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ سے متعلق نظام کیے استحکام کے حوالے سے تجارت سے متعلق معاہدہ دو بنیادی خصوصیات کا حامل ہوتا ہے۔ جن میں پہلی سطع پر تحفظ کے حوالے سے موجود قواعد کا استحکام اور کسی بھی تنازع کے حل کے حوالے سے ایک موثر میکنزیم کو موجود ہونا ایک ترین عوامل ہیں ۔ اس طرح سے معاہدہ کے حوالے سے جن بنیادی عوامل کو ضرورہ قرار دیا گیا ہے ان میں مشاورت، بنیادی سمجھ بوجھ، نظر ثانی ، عمل درامد اور اپیل سے متعلق امور کی انجام دہی کو یقینی بنایا جاتا ہے۔ اس طرح سے تمام متعلقہ فریقین کو اس حوالے سے پابند کیا جاتا ہے کہ وہ باہمی تنازعات کے حل کے لیے عالمی تجارتی تنظیم کے میکنزیم کے تحت اپنے تنازعات کے حل کے حوالے سے عوامل کویقینی بنائیں اور انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس سے متعلق مسائل کے حل کے لیے یکطرفہ تجارتی ردعمل کی بجائے WTO کا متعلقہ فورم سے باہم مشاورت سے مسائل کا حل یقینی بنایا جائے۔ اس طرح سے حال ہی میں امریکہ اور چین کے مابین انٹی لیکچوئی پراپرٹی کے تحفظ کے حوالے سے جو مسائل سامنے آئیں ہیں انہیں WTO کے متعلقہ فورم کی مدد سے مشاورتی عمل سے آسانی سے حل کیا جا سکتا تھا کیونکہ چین بھی WTOکا ایک فعال رکن ملک ہے۔ لیکن اس کے برعکس امریکہ متعلقہ فورم سے رجوع کرنے کی نجائے یکطرفہ انداز میں حکمتِ عملی کے تحت تجارتی محاز آرائی کو بڑھانے میں مصروف ہے۔ اس طرح سے امریکہ کا یہ اقدام نہ صرف WTOکی روح کے خلاف ہے بلکہ اس طرح سے امریکہ نے عالمی قیادت کو بھی شرمندہ کیا ہے۔ امریکہ ایک طرف خود کو عالمی معیشت اور بین الاقوامی پراپرٹی رائٹس کے حوالے سے رہنما سمجھتا ہے لیکن دوسری جانب امریکہ نے بہت سے مواقعوں پراپنے مفادات کو یقینی بنانے کے لیے بین القوامی قواعد کی خلاف ورزی کی ہے۔ اس طرح امریکی اقدمات سے نہ صرف عالمی قواعد کی خلاف ورزی کی ہے بلکہ ان عالمی اداروں کی اتھارٹی پر بھی اپنے درعمل سے سوال اٹھائے ہیں بلکہ عالمی تحفظ میکنزیم کے حوالے سے بہت سی غیر یقینی صورتحال کو جنم دی ہے۔ امریکہ نے اس حوالے سے خود بھی اعتراف کیا ہے کہ تجارتی جنگ شروع کرنے کے حوالے سے سیکشن 301کی تحقیات ایک بنیادی حکمتِ عملی نہیں ہے۔ امریکہ انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کے حوالے سے اپنے مفادات کو ترجیع دیتا ہے اور اس ضمن میں جبری ٹیکنالوجی منتقلی کے ضمن میں چین پر الزامات عائد کیئے جا رہے ہیں تاکہ چینی قیادت پر دبائو بڑھایا جا سکے۔ اس ضمن میں جدید ٹیکنالوجی کی حصول بین الاقوامی کمینوٹی کے مابین ایک جنگی میدان کی صورت اختیار کر چکا ہے۔ عالمی سطع پر تیزی سے جاری تبدیلیوں اور داخلی عوامل کے سبب جو چیلنجز سامنے آ رہے ہیں اس کے باوجود چین اوپننگ اپ پالیسی کے تسلسل کے حوالے سے پر عزم ہے اور اس حوالے سے اصلاھات کے تسلسل اور جدیدیت پر مبنی ڈیویلپمنٹ منصوبہ بندی کے تسلسل کے لیے پر عزم ہے۔ اس حوالے سے چین سختی کیساتھ بین الاقوامی معیار کے حامل انٹی لیکچوئل پراپارٹی رائٹس کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے کوشاں ہے لیکن عالمی سطع پر متعلقہ تعاون یقینی بنایا رکھا جا سکے۔ جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین انٹی لیکچوئل پراپرٹی رائٹس کے تحفظ کو یقینی بنانے میں کس قدر سنجیدہ کوششوں کو یقینی بنائے ہوئے ہے۔۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ