بریکنگ نیوز

بیلٹ اینڈ روڈ تعاون پروگرام عالمی سطع پر مشترکہ خوشحالی کے روشن مستقبل کی جانب گامزن

China-economy.jpg

(خصوصی رپورٹ):۔ ڈیویلپمنٹ عالمی مسائل کے حل کے حوالے سے وہ کنجی ہے جس کی مدد سے درپیش چیلنجز بہتر اور متوازن انداز میں حل کیئے جا سکتے ہیں اور چین کی سرکردگی میں جاری بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام تمام منسلک ممالک کو ڈیویلپمنٹ کے بنیادی مقاصد کیساتھ لیکر آگے بڑھ رہا ہے، یوں چین بیلٹ اینڈ روڈ فورم کی مدد سے ایک زمہ درانہ انداز میں اس پروگرام میں شریک تمام ممالک کو یکساں انداز میں آگے بڑھنے کا موقع فراہم کر رہا ہے تاکہ دنیا خوشحال روشن مستقبل کی جانب یکساں انداز میں بڑھ سکے۔ گزشتہ 6سالوں میں جب سے چین نے بیلٹ انڈ روڈ پروگرام کا آغاز شروع کیا ہے اس فورم سے منسلک تمام ممالک ایک متحرک اور موثر انداز میں ڈیویلپمنٹ کی جانب گامزن ہو چکے ہیں ، اور یہ ہی وہ بنیادی وجہ ہے کہ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کی عالمی سطع پر ہر گزرتے دن کیساتھ اہمیت میں تیزی سے اضافہ ہو رہا ہے اور دنیا علاقائی تعاون کے حوالے سے قائم اس فورم کی جانب تیزی سے مائل ہو رہی ہے۔ تمام بنی نوع انساں کی ہمیشہ ہی سے یہ خواہش رہی ہے کہ وہ خوشی، اطمینان اور خوشحالی کیساتھ اپنی زندگی بسر کر سکیں، لیکن عالمی سطع پر جن اقتصادی چیلنجز کا سامنا ہے انہیں دیکھتے ہوئے حالیہ چند سالوں میں دنیا کی معاشی قوتیں جس طرح سے مالیاتی بحران سے نبر آزما ہے ان عوامل کے سبب عالمی سطع پر معیشت اور اقتصادی امور بہت سی غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہے۔ اور انہی مسائل اور چیلنجز کے سبب عالمی ماہر ین موجود عالمی معاشی چیلنجز سے باہر نکلنے کے حوالے سے دیگر عوامل اور محرکات کی جانب تیزی سے سوچ رہے ہیں ۔ اس ضمن میں عالمی مسائل اور اقتصادی امور کے امریکی ماہرولیم جونز نے کہا ہے کہ اس غیر یقینی صورتحال کے وقت بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام سے اس فورم سے منسلک ممالک کو ایک امید کی کرن سے روشناس کیا ہے اور بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام نے جس طرح سے عالمی ممالک کو مشترکہ ڈیویلپمنٹ کے حوالے سے گامزن کیا ہے یہ ویژن موجود معاشی چیلنجز کے حل کے حوالے سے بہت اہمیت کی حامل ہے۔ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کی ویژن کے تحت جس طرح سے مختلف شعبوں میں ڈیویلپمنٹ کے تسلسل کو یکساں انداز میں منتقل کیا جا رہا ہے یہ عوامل بہت کلیدی اہمیت کے حامل ہے اور دنیا کو معاشی انضمام کی جانب لیکر بڑھ رہے ہیں جس کی مدد سے تمام ممالک یکساں انداز میں ان عوامل سے فاہدہ اٹھا سکیں گے۔ باہمی اور عملی تعاون بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کے بنیادی مقاصد اور عوامل کے حوالے سے ایک اہم ترین امر ہے، پالیسی کوآرڈینیشن، باہمی مربوط سہولیات، تجارتی تسلسل، مالیاتی انضمام اور پیپل ٹو پیپل مضبوط روابط یہ وہ بنیادی محرکات ہیں جو بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام اس فورم سے منسلک تمام ممالک کو یکساں انداز میں فراہم کر رہا ہے۔ ان مقاصد، محرکات اور فواہد کیساتھ ساتھ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام نہ صرف دنیا بھر کی انٹر پرائسز کو چین کی مارکیٹ سے استعفادہ حاصل کرنے کے حوالے سے مواقع فراہم کررہا ہے وہیں عالمی سطع پر وسائل کو مختص کرنے کے حوالے سے علاقائی اور عالمی سطع پر ایک مربوط اور فعال میکنزیم کی مضبوطی کے حوالے سے ایک موثر فورم بھی فراہم کر رہا ہے۔ باہمی اشتراک اور عملی تعاون کا فروغ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کیاہم ترین اکائیوں میں سے ہے اور اشتمالی گروتھ کے حوالے سے یہ فورم علاقائی اور عالمی سطع پر اپنی اہمیت میں تیزی سے اضافے کو یقینی بناتے ہوئے آگے بڑھ رہا ہے۔ اس فورم کے تحت مشرقی افریقہ میں پہلی بار الیکٹرک ریلویز کا آغاز یقینی بنایا جا چکا ہے چین کے تعاون سے ادیس ابابا۔جبوتی ریلوے نیٹ ورک کے قیام سے جہاں لاکھوں لوگوں کو بہتر اور معیاری سفری سہولیات میسر آ سکیں گیں ، وہیں مشرقی افریقہ کے تمام ممالک کو ایتھوپیا کیساتھ باہمی تجارت روابط کو مضبوط کرنے کے حوالے سے ایک اہم ترین پلیٹ فارم مہیسر حاصل ہوگا۔ اسی طرح سے زیمون۔بورکا پل کی تعمیر نے اس پل کے دونوں جانب بسنے والی کمیونٹیز کی زندگی میں اہم ترین تبدیلی یقینی بنائی ہے اور ہزاروں ایکڑ زمین اس پل کی تعمیر سے تجارتی اور زرعی تعاون میں فعال ہو چکی ہے،۔اسی طرح سے انہی عوامل کی بدولت میں دنیا کی دریائی سب سے بڑی پورٹ جرمنی میں ڈویز برگ پورٹ ماضی کی روایات کے طرح سے ایک بار پھر سے خوشحالی اوردرخشاں تعمیری سرگرمیوں کی جانب رواں دواں ہے۔ یوں بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام سے منسلک تعمیری پراجیکٹس کی تعمیر سے ریلویزم روڈز، پلوں اور بندرگاہوں کی تعمیر سے بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام عالمی اقتصادی ڈیویلپمنٹ کے حوالے سے ایک ٹھوس بنیاد فراہم کر رہا ہے۔ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کے حوالے سے جاری ڈیویلپمینٹ پراجیکٹس عالمی ڈیویلپمنٹ کے حوالے سے بھی کلیدی اہمیت حاصل کر چکے ہیں یہ فورم عالمی اقتصادی عوامل کو شفاف، اوپن، اشتمالی، متوازن اور سب کیلئے یکساں مفید عوامل کی جانب لیکر یقینی بنا رہے ہیں اس حوالے سے عالمی بینک کی جدید ترین اسٹڈیز کیمطابق بیلٹ اینڈ روڈ پراجیکٹس کی تعمیر سے عالمی سطع پر تجارتی لاگت میں 1.2فیصد سے لیکر 2.5فیصد تک کمی رکارڈ کی جائیگی اور چین۔سنٹرل ایشیا، اور مغربی ایشیا سے متعلق کاریڈور کی تعمیر سے اس تجارتی لاگت میں نمایاں حد تک 10.2فیصد تک کمی ریکارڈ کی جائے گی۔ اور رواں سال عالمی میعشت میں ان پراجیکٹس کی مدد سے اعشاریہ ایک فیصد تک اضافہ بھی ریکارڈ کیا جا رہا ہے۔ اس حوالے سے ایک ماریکی اسکالر نے نائیٹ تائم لائیٹ ڈسٹری بیوشن نقشے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کے حوالے سے کنسٹرکشن سائیٹس پر جیسے دن رات کام ہو رہا ہے رات کے اندھیرے میں اس سائیٹس پر جاری روشی دیگر علاقوں تک پہنچتی ہے، جس سے اندازہ لگایا جا سکتا ہے کہ چین کے ان ڈیویلپمنٹ پراجیکٹس کی مثبت اثرات صرف مقامی معیشت پر ہی اثرا نداز نہیں ہوتے بلکہ ان جاری تعمیری پراجیکتس کے دیگر قریب ریجنز اور علاقوں پر بھی بھر پور انداز میں اثرات مرتب ہو رہے ہیں اس طرح سے ان قریبی علاقوں کی معیشت اور ڈیویلپمنٹ بھی ان پراجیکٹس کی مدد سے تیزی سے ڈیویلپ ہو رہی ہے۔ امریکی اسکالر نے واضح کیا کہ ہمارے خواب تبھی حقیقت کا روپ دھار سکتے ہیں جب ہم دلجمعی سے سخت محنت کرتے ہیں ، بیلٹ اینڈ روڈ کے جاری پراجیکتس کی مدد سے وہ دہیاتی لوگ جو کبھی نئے موٹر سائیکل بھی افورڈ نہیں کر سکتے تھے آج نئے کشادہ گھر تعمیر کر رہے ہیں اور پورے گائوں تیزی سے خوشحالی اور ترقی کی جانب گامزن ہو چکے ہیں سمندر کے پار ماپوٹو بے بریج سے اس علاقے میں تیزی سے ڈیویلپمنٹ ہو رہی ہے اور مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ہمیں یہ پل بہت عزیز ہے جس کی بدولت ہم بیرونی دنا سے جڑ چکے ہیں ، اس طرح سے بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کے حوالے سے دیگر بہت سے مقامی لوگوں کے جذبات ہیں جن کی زندگیوں میں بیلٹ اینڈ روڈ پروگرام کے سبب تیزی سے مثببت انداز میں تبدیل ہو رہی ہے، چین کے تجویز کردہ ان ڈیویلپمینٹ پراجیکٹس آج تمام منسلک ممالک تیزی سے ڈیویلپمنٹ اور ترقی و خوشحالی کے سفر پر گامزن ہو چکے ہیں اور جس تیزی سے یہ خطے ترقی کی جانب گامزن ہیں اس کی مثال انسانی تاریخ میں نہیں ملتی۔دوسرے بین الاقوامی بیلٹ اینڈ روڈ فورم کو مشترکہ خوشحالی اور ترقی و ڈیویلپمنٹ کے حوالے سے ایک امید کی کرن کے طور پر دیکھا جا رہا ہے اور یہ یقین کیا جا رہا ہے کہ دوسرا بینالاقوامی بیلٹ اینڈ روڈ فورم عالمی سطع پر اقتصادی خوشھالی اور بنی نوع انسان کی ترقی کا سبب بنے گا۔اس تناظر میں تمام منسلک ممالک باہمی اشتراک اور مستقبل میں مشترکہ خوشحالی کے حوالے سے تمام عوامل کو یقینی بنانے کے حوالے سے باہمی و عملی تعاون کے فروغ کیلئے پر عزم ہیں ۔۔۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ