بریکنگ نیوز

عبادت یا مذھب کے نام پر سیاحت

b53d91e7-147a-46f9-8eed-8088e2a3e52b.jpg

طاہر ملک
جس معاشرے میں چالیس فیصد آبادی سطح غربت سے نیچے زندگی بسر کررھی ھو. یعنی پینے کا صاف پانی میسر نہ ھو. صحت تعلیم کی سہولیات میسر نہ ھوں بارش میں نا پختہ چھت ٹپکتی ھو. بیماری میں علاج کے لئے پیسے نہ ھوں دو وقت کی روٹی نصیب ھونا مشکل امر ھو روزانہ کی آمدن ایک ڈالر سے بھی کم ھو ایسی آبادی کو غربت کی لکیر سے نیچے زندگی بسر کرنی پڑے اس کی امیر ٹروت مند حکمران اشرافیہ اس میں ماضی کے حکمران جو آج اپوزیشن میں ہیں بھی شامل ھیں ھر سال کئی دفعہ عمرے حج چاھئے سرکاری خرچ پر یا اپنے وسائل پر ادا کرے. فرسٹ کلاس میں سفر کرے مہنگے فائیو سٹار ھوٹلوں میں قیام کرکے اپنی مالی برتری ظاہر کرے بڑے فخر سے کہے کہ یہ تو ھمارا ھر سال کا معمول ھے اس میں کاروباری حضرات بھی شامل ہیں جو منڈی اور اڑھت میں ذخیرہ اندوزی اور طلب و رسد سے کھیل کر کاروباری منافع کو آخری حد تک لے جاتے ہیں. اشیائے خوردونوش عوام کی پہنچ سے دور لے جاتے ہیں اور پھر رمضان المبارک کا آخری عشرے حرم پاک میں گزارتے ہیں.
ان سیاستدانوں علما مشائخ اور درباروں کے سجادہ نشین بیوروکریٹس اور کاروباری حضرات سے میرا سوال ھے کہ کیا آپ کی رھایش گاہ کے قریب چالیس گھروں کے قریب کوئی غریب دو وقت کی روٹی کا محتاج تو نہیں کسی غریب کی بیٹی کی شادی میں پیسے نہ ھونے کی وجہ سے رکاوٹ تو نہیں کسی غریب کے بچے کے سکول کالج کی فیس ادا نہ ھونے کی وجہ سے تعلیم تعطل کا شکار تو نہیں. کسی غریب کو اپنے والدین کے علاج میں غربت تو نہیں آڑے آ رھی اور کیا آپ کے نوکر ڈرائیور خانساماں چوکیدار نے اس سال اپنے اور بچوں کے لئے عید کے کپڑے جوتے لئے اگر نہیں تو میں پورے وثوق سے کہتا ھوں کہ اللہ تعالیٰ کو آپ کی عبادت قبول نہیں آپ کسی غریب جو عمرہ حج کی مالی استطاعت نہیں رکھتا اس کو بھی عمرہ کروا سکتے ہیں . آپ کی عبادات محض دکھاوا ھے. اللہ تعالیٰ کی بندگی کے حصول کے بجائے تاجرانہ عبادت سے کیا حاصل.
بقول اقبال
خدا کے عاشق تو ھیں ھزاروں بنوں میں پھرتے ہیں مارے مارے
میں اس کا بندہ بنوں گا جس کو خدا کے بندوں سے پیار ھوگا.

نوٹ میری یہ تحریر پڑھ کر کچھ لوگ یہ کہیں گہ کہ ان میں سے کچھ لوگ زکوٰۃ خیرات بھی ادا کرتے ہیں تو میری رائے میں اپنے مال کو زکوۃ کے ذریعہ پاک کرنے کے لئے کم ازکم شرح بیان کی گئی ھے جب کہ انبیا صوفیا نے مال و دولت اکٹھا ھی نہیں کیا کہ سال بعد زکوٰۃ ادا کرسکیں.

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ