بریکنگ نیوز

اسم با مسمیٰ بینظیر

IMG-20200621-WA0007.jpg

ــ
تحریر سردار مقبول ایڈوکیٹ

میں تاریخ میں کردار ڈھونڈنے لگا تو واقعی میری ناقص اور کم علمی کیوجہ سے مجھے کوئ ایسی سیاسی خاتون نظر نہ آئ جس کو بینظیر جیسا کہہ سکوں ۔مسز تھیچر ۔۔اندرا گاندھی وغیرہ ۔۔
کیا اٹھارہویں اور انیسویں بیسویں صدی میں کوئ ایسی خاتون آپکو نظر آتی ھے جو بینظیر جیسی دلیر صابر اور مدبر خاتون ہو ۔۔
میں نے تھیچر اور اندراگاندھی کا ذکر کیا وہ لوگوں سے ووٹ لینا اور بین الاقوامی ویژن والی عورتیں تھیں ۔۔لیکن کیا انھیں جیلوں کی تاریک کوٹھریوں میں ڈالا گیا ۔۔کیا انکا مقابلہ ملکی اور بین الاقوامی فوجوں سے تھا ۔۔۔۔نہیں ۔۔۔بس وہ سیاسی ہوم ورک کرتی تھیں اور آزادی سے اپنا کام کرتی تھیں۔۔۔
بینظیر کا آج یوم پیدائش ھے ۔۔میں نے بھی کچھ لکھنا چاہا لیکن میں سوچ رہا تھا کیا لکھوں ۔۔۔یقین مانیں مجھے کچھ سمجھ نہیں آ رہا تھا ۔۔یونہی اپنی لائبریری میں لگی کتابوں کو دیکھ رہا تھا تو ۔۔دختر مشرق کتاب پر نظر پڑی ۔۔میرے پاس یہ کتاب انگریزی میں ھے ۔۔اسکا پہلا باب ھے ۔۔۔۔۔میرے باپ کا قتل ۔۔یوں شروع ہوتا ھے ۔
“انھوں نے 4 اپریل 1979 کی صبح میرے باپ کو راولپنڈی کی سنٹرل جیل میں قتل کر دیا۔میں چند میل کے فاصلے پر ایک پولیس ٹریننگ سنٹر سہالہ میں قید تھی ۔میں نے اپنے باپ کے قتل کے لمحات کو محسوس کر لیا اگرچہ میری ماں نے مجھے سکون آور دوا بھی کھلائ تھی ۔میں اچانک رات دو بجے مستعد اٹھ بیٹھی ۔میری چیخیں گلے میں پھنس کر رہ گئیں ۔میں سانس نہیں لے سکتی تھی ۔۔پاپا پاپا پاپا ۔۔۔میرا جسم ٹھنڈا ہو رہا تھا۔۔گرمی کے باوجود مجھے کپکپی تاری ہوئ “…
جناب یہ ایک پیرا ھے ۔۔پھر اسکی ماں سمیت دونوں کو باپ کا آخری دیدار نہیں کرنے دیا گیا۔۔۔
بینظیر کے والد کو اتنی بڑی فوج نے قتل کیا جو بلامبالغہ دنیا کی بڑی افواج میں سے ایک ھے اور اتنی بڑی فوج جو امریکی فوج کا ایک ذیلی ادارہ بن چکی تھی ۔۔۔یعنی بینظیر اور بھٹو خاندان کی جنگ ملکی اور سپر پاور کی افواج سے تھی ۔۔۔
اب زرا سوچیں کہ کبھی اگر شہر کے دلیر اور امیر بدمعاش سے صرف ایس ایچ او خلاف ہو جاۓ تو انتہائی طاقتور آدمی اور اسکا خاندان بھی زندہ نہیں رہ سکتے ۔۔۔یہ سب حقیقت بینظیر کے سامنے تھی کہ ملک کی فوج ،عدلیہ ،سول بیوروکریٹ ۔۔سرمایہ دار جاگیر دار سب بھٹو خاندان کے دشمن ہو چکے ہیں اور انھوں نے ملکر اسکے باپ کو قتل کر دیا ھے ۔۔لیکن اسنے پھر بھی جدوجہد جاری رکھنے اور لڑنے کا فیصلہ کر لیا اور پورا خاندان اسکی آنکھوں کے سامنے مار دیا گیا ۔۔پھر ان سب دشمنوں کو عقل سے شکست دی ۔۔
انسانی اور اسلامی تاریخ میں ایک ہستی ایسی ھے جسکی خاک پا بھی بینظیر نہیں تھی اور وہ ہستی ھے حضرت زینب سلام اللہ علیہا کی جنکے بھائ بھتیجے بچے جوان سب انکی آنکھوں کے سامنے شھید ہوۓ لیکن کوفہ سے شام تک سفر جاری رہا ۔ راستے میں لق و دق صحراوں میں بچے شھید ہوۓ ۔۔لیکن خوف نہیں آیا ۔۔۔یزید کو للکارا اور انسانی تاریخ کی کمال فصاحت و بلاغت پر مبنی تقریر کی ۔۔۔بینظیر نے لاہور میں یا لیاقت باغ میں جو پہلی تقریر کی تھی اسکے الفاظ آج بھی سماعتوں کو مسحور کر دیتے ہیں ۔۔
آو ہمارا سینہ چیر کر کے دیکھو اسمیں تمہیں محمدصلى الله عليه و سلم کی امانت نظر آۓ گی ۔۔حضرت زینب اور فاطمة الزاہرا کا ذکر کیا جو الفاظ مجھے ہو بہو یاد نہیں ۔۔۔۔
بینظیر پنج تن پاک اور اہلبیت محمد صلى الله عليه و سلم کی کنیز تھیں ۔۔۔
قوم کو بینظیر کا جنم دن مبارک ہو ۔۔

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ