بریکنگ نیوز

اسلامی بینکاری: سرمایہ داری بنام اسلام

IMG-20200613-WA0106.jpg

تحریر: ڈاکٹر عبدالواحد
ٹوئٹر: abwahidF

ماسٹر ڈگری فنانس سے فارغ التحصیل ہونے کے بعد میرے اندر جنون کی حدتک ایک خواہش پیدا ہوئی کہ میں پی ایچ ڈی ان اسلامک فنانس کرو۔ سب سے پہلے میں نے وہ تمام تر دستاویزات تلاش کیے جن پر اسلامک بینکنگ اور فنانس کے الفاظ آویزاں تھے انکو پڑھنے اور مختلف علماء سے ملنے کے بعد میں نے پی ایچ ڈی میں داخلہ اس یونیورسٹی میں لیا جہاں اسلامک بینکنگ اور فنانس کے مضامین پڑھائے جارہے تھے اسلامک لاء اف کنٹرک، اسلامک کیپٹل مارکیٹس اور اسلامی بنیکاری کے مضامین کو انتخاب کیا مگر مجھے کچھ عرصے بعد احساس ہوا کہ میں تو ایڈم سمتھ کے نِظریات بشکل فقہ اور سودی بینکاری سے منسلک تمام تر پراڈکٹس اور سروسز کو اسلامی جبہ پہنا کر پڑھ رہا ہوں۔ تو اس پرمیرے شدید اختلافات بھی ہوتے تھے مگر معلمین کی جوابی گفتگو مجھے مطمئن نہیں کرپاتی تھی۔ بہرکیف میں نے اپنا ارداہ بدلا اور ریسرچ میں نے خالصتاً کیپلٹسٹ فریم ورک پر کی۔ لیکن میرے دل میں یہ بات بہت کھٹ کھٹاتی تھی کہ آیا اگر اسلام ایک مکمل ضابطہ حیات بشمول اقتصادیات ہے تو پھر یہ گنڈے پیر کنونشنل بینکنگ کے موجد شدہ نظریات پر عمل پیراکیوں ہیں۔ اگر انٹربینک آفرنگ ریٹ انکے لئے شرح سود ہے تو اسلامک بنک کیلئے کیوں شرح منافع کا درجہ اختیارکرلیتی ہے وغیرہ وغیرہ۔

اسکے بعد اسلامک بینکنگ پر مبنی مطبوعات کا بغور مطالعہ کیا اسمیں جو جامع اور مرتب کڑی ملی وہ تھی اسلامک فری مارکیٹ انسٹی ٹیوٹ کا مقالہ بعنوان اسلام اور فری مارکیٹ۔پھر منظر کہف کی تصنفات پھر گولڈن میں ساکس پھر عراقی مذہبی رہنماووں کی تصنیفات اسلامک اکنامکس اور اسلامک سوسائٹی وغیرہ وغیرہ۔ جسمیں بیانیہ یہ تھا کہ قران شخصی ونجی ملکیت کا حق تسلیم کرتاہے قران معاہدے کے حقوق کو بھی تسلیم کرتاہے اور اوفو بالعہد کا بھی درس دیتا ہے رسول اللہ ﷺ کی تعلیمات اشیاء کی قیمت مارکیٹ میں طلب ورسد پر معین کرنے کی ہدایت کرتی ہیں اور مدنیے کی اسلامی ریاست میں رسول اللہ ﷺ کی حیات میں کوئی ٹیکس نہیں تھا وغیرہ وغیرہ۔
اس پورے بیانیے کے پس پردہ تین چیزیں کارفرما تھیں ایک یہ کہ پیٹرو ڈالر کو کسی چینل کے ذریعے دوبارہ مغربی معیشت کا حصہ بنانا، دوسرا سوشلزم کے مدمقابل ایسا معاشی پلان لانا جو فری مارکیٹ کا بھی خواں ہو اور سودی عنصر بھی پوشیدہ ہو تاکہ جو اسلامئزیشن کی لہر چل پڑی ہے اور عرب وعجم کےجو مسلمان ہیں انکے سرمایہ کو ایک مستقل ٹھکانہ میسر آئے جسمیں اپنائیت بھی اور سوشلزم کا توڑ بھی اور تیسری بات یہ کہ جو جہادی ذرائع ہیں انہیں معاشی تعاون کا ذریعہ بھی مل جائے اس لیئے شرعی بورڈ بنائے گئے جسمیں مقتدر علماء کو شامل کیا گیا دوسری طرف مغربی سرمایہ کار اگرچہ کنونشنل بینکنگ میں تو کافی حد تک عرب علاقوں میں سرئیت کرچکے تھے مگر اس لہر میں انہیں ایک متبادل اور نیا سرمایہ داری کا ذریعہ ہاتھ آیا۔ اسمیں سٹی بینک ہراول دستے میں شامل تھا سٹی بینک، ہانگ کانگ، شنگھائی کارپوریشن، شکاگو یونیورسٹی ہارورڈ یونیورسٹی اور جنوبی کیلی فورنیا یونیورسٹی کے گریجوایٹس اور بڑی آئل کیمپنیاں اور ٹیکنیشن کیمپنیاں شامل تھیں. فیصل بنک نے اسلامی بنکاری کی شاخیں تمام اسلامی ممالک کے شہروں میں کھولیں۔سعودی عرب کے وزیرخارجہ فیصل کے کزن شہزادہ محمد نے فیصل بنک کےاور البراکہ بنک کے مالک صالح کمال نے اس نیٹورک کی شاخوں کو عروج کمال بخشا۔ اسکی وجہ سے شہزادہ عشر کہلانے لگا۔ پس پردہ وہی دو طاقتور قوتیں کارفرما تھیں ایک مسلم مطلق العنان حکومتیں اور دوسری سامراجی قوتیں اور انکے مسائل۔ دونوں کا مشترکہ دشمن سوشلزم اور اسکا بڑھتا ہوا اثرورسوخ تھا۔ دوسرا سوال یہ ہے کہ اسلامک بنکاری آیا واقعی اسلامی تعلیمات کے مطابق ہے کہ نہیں۔ اس سوال کا جواب فقط اتنا ہے کہ کونسی پراڈکٹ یا سروس کنونشنل بنک کی ایجاد کردہ نہیں ہے اور دوسرا بات یہ کہ انٹربنک آفربنک ریٹس اگر سود ہے تو تمام اسلامی بنکاری کی منافع کی شرح کی بنیاد وہی IBOR کیوں ہے۔ اور اگر وہ شرح سود نہیں ہے تو مارکیٹ کی شرح نمو پاکستان میں کبھی بھی %7 سے زیادہ نہیں رہی ہے مگر شرح منافع دس فیصد سے کبھی کم رہا نہیں تو پھر بقایا فیصد بنک چندوں کے ذریعے اپنے صارفین کو پورا کرکے دیتے ہیں کیا ؟ یہ وہ سوالات ہیں جنکا آج تک مجھے کوئی جواب نہیں ملا.

شیئر کریں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Top

blog lam dep | toc dep | giam can nhanh

|

toc ngan dep 2016 | duong da dep | 999+ kieu vay dep 2016

| toc dep 2016 | du lichdia diem an uong

xem hai

the best premium magento themes

dat ten cho con

áo sơ mi nữ

giảm cân nhanh

kiểu tóc đẹp

đặt tên hay cho con

xu hướng thời trangPhunuso.vn

shop giày nữ

giày lười nữgiày thể thao nữthời trang f5Responsive WordPress Themenha cap 4 nong thonmau biet thu deptoc dephouse beautifulgiay the thao nugiay luoi nutạp chí phụ nữhardware resourcesshop giày lườithời trang nam hàn quốcgiày hàn quốcgiày nam 2015shop giày onlineáo sơ mi hàn quốcshop thời trang nam nữdiễn đàn người tiêu dùngdiễn đàn thời tranggiày thể thao nữ hcmphụ kiện thời trang giá rẻ